اخباری مالکان کی حکومت کیساتھ دھوکے بازی عروج پر


all-pakistnai-newspapers
لاہور (مفرخ ٹیپو)دوسروں کو نصیحت‘ خود میاں فصیحت۔ یہ بالکل فٹ آتا ہے پاکستان کے اخباری مالکان پر۔ پاکستان کے تمام اخبارات حکومت، عوام اور مملکت پاکستان کو دھوکہ دینے میں ملوث ہیں۔اور پی آئی ڈی کے جاری کردہ99 فیصد سرکولیشن سرٹیفکیٹ بوگس ہیں۔دیگر تمام معاملات ایک طرف رہے یہ اخباری مالکان پیسے کی ہوس میں اتنے اندھے ہو چکے ہیں کہ اپنے اخبار کی چھپائی بھی درست نہیں بتاتے۔ سرکولیشن لاکھوں میں ظاہر کر تے ہیں جبکہ اخبار چھپتے گنتی کے ہیں۔
newspapers-01
نیوز لائن کے مطابق ایک بڑا اخباری مرکز ہونے کے باوجود لاہور میں سینکڑوں کی تعداد میں گھوسٹ اخبارات چھپتے ہیں۔ وفاقی دارالحکومت ہونے کے باوجود اسلام آباد میں بھی گھوسٹ اخبارات کی بھرمارہے۔ حالات کراچی‘ پشاور‘ کوئٹی کے بھی کچھ اچھے نہیں ہیں۔گھوسٹ اخبارات کی یہاں بھی بھرمار ہے۔ جب ملک کے وفاقی اور صوبائی دارالحکومت میں سینکڑوں کی تعداد میں گھوسٹ اخبارات چھپ رہے ہوں اور حکومت و حکومتی ادارے ان کو شرف قبلویت بھی بخش رہے ہوں تو ایسے میں چھوٹے شہروں کی حالت زار کسی بیان کے قابل نہیں ہو سکتی۔نیوز لائن کے ایک سروے میں سامنے آیا ہے کہ گھوسٹ اخبارات کے حوالے سے پنجاب کا دوسرا بڑا شہر فیصل آباد پہلے نمبر ہے جہاں ساڑھے پانچ سو سے زائد اخبارات کے ڈیکلریشن ہیں مگر چھپ کر مارکیٹ میں 15سے20ہی آتے ہیں۔ اور جو مارکیٹ میں آتے ہیں وہ بھی گھوسٹ کی لسٹ سے خارج نہیں ہو پاتے۔ 40سے 50ہزار تک کا سرکولیشن سرٹیفکیٹ رکھنے والے اخبارات چھپتے ایک ہزار بھی نہیں ہیں۔بہاولپور‘ سکھر‘ حیدر آباد‘ رحیم یار خان‘ ملتان‘ ساہیوال‘سرگودھا‘ ڈی جی خان‘ گوجرانوالہ سمیت ملک کے دیگر اضؒاع سے چھپنے والے اخبارات کا حال بھی کچھ مختلف نہیں ہے اور وہ بھی حکومت‘ عوام اور مملکت پاکستان کو براہ راست دھوکہ دینے میں ملوث ہیں۔
aman

نیوز لائن سروے میں سامنے آیا کہ روزنامہ ایکسپریس‘ جنگ‘نوائے وقت‘پاکستان‘دنیا‘نئی بات‘جناح‘نیا بول‘روزنامہ پیغام‘ عوام‘ غریب‘ کمرشل نیوز‘ روزنامہ شیلٹر‘نیا اجالا‘ڈیلی رپورٹ‘ ڈیلی بزنس رپورٹ‘نیا زمانہ‘ آج‘ صبح‘ نیوز پاکستان‘ کاوش‘ تجارتی رہبر‘امن‘ پبلک‘ایث نیوز‘ انتخاب‘ آواز‘اساس‘ انصاف‘ یلغار‘ سلطنت‘ پریس کانفرنس‘ انقلاب‘ خبریہ‘ الاخبار‘ نئی فکر‘ نیا دور‘اذکار‘قومی اخبار‘نیوز مارٹ‘ امت‘ عوامی آواز‘ پناہ سمیت ملک بھر کے تمام چھوٹے بڑے اخبارات حکومت کو دھوکہ دینے میں ملوث ہیں۔ ملک بھر کے 80فیصد اخبارات تو براہ راست گھوسٹ ہیں کہ چھپ کر مارکیٹ میں آتے ہی نہیں ہیں جبکہ سرکولیشن ہزاروں اور لاکھوں میں ہے اور حکومت سے سرکاری جبکہ اس بوگس سرکولیشن سرٹیفکیٹ کے بل بوتے پر کروڑوں روپے کے سالانہ اشتہارات عوام اور پرائیویٹ کمپنیوں سے حاصل کر رہے ہیں۔

Related posts