جعلی کھاد کا دھندا عروج پر‘ محکمہ زراعت خاموش تماشائی


فیصل آباد(نیوزلائن)فیصل آباد میں جعلی کھاد کی تیاری اور فروخت کا دھندا بڑے پیمانے پر کیا جارہا ہے۔ شہر میں کئی مقامات پر جعلی کھاد تیار کی جارہی ہے اور مارکیٹ میں فروخت کی جارہی ہے۔محکمہ زراعت کے حکام صورتحال کا علم ہونے کے باوجود مجرمانہ خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔ نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد میں بڑے پیمانے پر جعلی کھاد کی تیاری و فروخت کی جارہی ہے۔ فیصل آباد میں جعلی کھاد تیار کرنے والے دو درجن سے زائد کارخانے لگے ہوئے ہیں۔ جن میں بڑے برانڈز کی جعلی کھادیں تیار کرکے مارکیٹ میں فروخت کی جاری ہیں۔ اس دھندے میں متعدد کھاد ڈیلر بھی ملوث ہیں جو جعلی کھادوں کو اصل کھاد کیساتھ شامل کرکے فروخت کرتے اور کسان کو ناقابل تلافی نقصان پہنچانے کا باعث بنتے ہیں۔جعلی کھاد کے دھندے کیخلاف محکمہ زراعت کی کارروائیاں نہ ہونے کے برابر ہیں۔زراعت افسران اپنے دفاتر سے نکلنے اور جعلی کھاد کا دھندہ کرنے والوں کیخلاف ایکشن لینے کو تیار ہی نہیں ہیں۔ سارا دن دفاتر میں ’’ ویلے ‘‘بیٹھنے اور نوکری کا وقت پورا کرنے کے سوا کوئی سوچ محکمہ زراعت کے افسران میں پروان ہی نہیں چڑھ رہی۔ایک سال کے دوران محکمہ زراعت کے فیصل آباد میں تین درجن سے زائد افسران و عملے نے مشترکہ کاوشیں کرکے جعلی کھاد تیار کرنے والو ں کیخلاف 9چھاپے مارے ان میں سے بھی سب کامیاب نہ ہو سکے۔ ذرائع کے مطابق جعلی کھاد کا دھندا کرنے والوں میں سے متعدد کو محکمہ زراعت کے ہی بعض افسران کی پشت پناہی حاصل ہے ۔ جس کی وجہ سے ان کے خلاف کارروائیاں نہیں ہوتیں اور انہیں کھل کھیلنے کا موقع ملا ہوا ہے۔

Related posts