جھل مگسی: درگاہ فتح پور شریف میں دھماکہ، 15 افراد جاں بحق

نصیر آباد(نیوزلائن)بلوچستان کے ضلع جھل مگسی میں درگاہ فتح پور میں دھماکے کے نتیجے میں 15 افراد جاں بحق اور 40 سے زائد زخمی ہوگئے۔ نیوزلائن کے مطابق جھل مگسی میں واقع درگاہ فتح پور کے مرکزی دروازے پر دھماکا ہوا۔بلوچستان حکومت کے ترجمان انوار الحق کاکڑ کے مطابق ایک پولیس کانسٹیبل خود کش حملہ آور کو درگاہ کے اندر داخل ہونے سے روکتے ہوئے شہید ہوا جبکہ وزیر داخلہ بلوچستان سرفراز بگٹی کا کہنا ہے کہ دھماکا خودکش تھا یا پلانٹڈ فی الحال کچھ کہنا قبل ازوقت ہوگا، اس سلسلے میں تفصیلات حاصل کی جارہی ہیں۔ دھماکے کے بعد قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکاروں نے درگاہ کو گھیرے میں لے لیا جبکہ امدادی ٹیمیں بھی جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں اور زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا جارہا ہے۔دھماکے کے بعد ڈیرہ مراد جمالی اورسبی کے اسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔ اب تک کی اطلاعات کے مطابق زخمیوں کی تعداد 40 سے زائد ہوچکی ہے جن میں دو پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔ جمعرات کا دن ہونے کی وجہ سے درگاہ میں لوگوں کی بڑی تعداد موجود تھی جبکہ پولیس کا کہنا ہے کہ درگاہ میں عرس جاری تھا اور اسی دوران دھماکا ہوا۔ ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ بھی ظاہر کیا گیا ہے۔یاد رہے کہ رواں برس فروری میں بھی سیہون شریف میں درگاہ لعل شہباز قلندر میں خود کش دھماکا ہوا تھا جس کے نتیجے میں 88 افراد جاں بحق ہوئے تھے۔ اس سے قبل نومبر 2016 میں بلوچستان ہی میں درگاہ شاہ نورانی میں دھماکا ہوا تھا جس کے نتیجے میں 52 افراد جاں بحق اور 100 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔

Related posts

Leave a Comment