سیاسی عمل کو انفرادی اور گروہی مفادات سےآزاد ہونا چاہیے، صدرممنون

اسلام آباد(نیوزلائن) صدرمملکت ممنون حسین نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت نے بڑے نشیب و فراز دیکھے ، مقاصد کے حصول کے لیے سفر جاری ہے ، چیلنجز کے باوجود پارلیمنٹ نے اپنی فیصلہ کن حیثیت برقرار رکھی ، پارلیمنٹ قومی اتحاد بن کر ابھری ، جمہوریت نے قوم کی حمایت سے بڑے معرکے طے کیے ، سیاسی عمل کو انفرادی اور گروہی مفادات سےآزاد ہونا چاہیے ، پارلیمنٹ نےمشکل حالات میں قومی اتحاد کا ثبوت دیا ، تاریخ اس پارلیمنٹ کا کردار ہمیشہ یاد رکھے گی۔ صدرمملکت نے کہا معیشت کے استحکام اور عوامی فلاح کیلئے کئی پرکشش اقدامات کیے گئے ہیں ، سی پیک کا سفر مشکل حالات سے نکل کر بہتر مستقبل کی جانب جاری ہے ، بلوچسان ، فاٹا کو قومی دھارے میں لانے کا مقصد عوامی فلاح و بہبود ہے ، قومی ترقی کو متنازعہ بنانے کی ہر کوشش کو نا کام بنانا ہے ، ماضی کےغلط فیصلوں اور پالیسیوں کی وجہ سے مسائل ورثے میں ملے ، عالمی منڈیوں میں قیمتوں کی کمی کی وجہ سے برآمدات مشکلات کا شکار ہیں ، حکومت کے اقدامات کی بدولت ملک مسائل سے نکل جائے گا ، ترقیاتی بجٹ میں 3 گنا اضافہ کیا گیا ، ترقی کے ثمرات سے عوام مستفید ہو رہے ہیں ، قومیں دیرپا ترقی کیلئے انسانی وسائل ، بنیادی ڈھانچے پر سرمایہ کاری کرتی ہیں ، عالمی مالیاتی ادارے پاکستان میں معیشت میں استحکام کے معترف ہیں ، زراعت معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے ، توانائی بحران کی وجہ سے معیشت متاثر ہوئی۔ ممنون حسین نے کہا بھارت سے تمام مسائل کا حل مذاکرات سے چاہتے ہیں ، بھارت نے خطے کے حالات خراب کیے ، جاسوسی اور دہشتگردی کو فروغ دیا ، ہمسایہ ملک خطے کے امن و امان کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے ، کشمیریوں پر وحشیانہ مظالم جاری ہیں ، کشمیری بھائیوں کی سیاسی ، اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھیں گے ، مسئلہ کشمیر کا واحد حل اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے استصواب رائے کے حق سے ہے ، بھارت کے جارحانہ طرز عمل کی پرزور مذمت کرتے ہیں۔ کابل دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا افغان حکومت و عوام سے اظہار یک جہتی کرتے ہیں ، امریکا و یورپ سے تعلقات کو اہمیت دیتے ہیں ، نئی امریکی انتظامیہ کے ساتھ حالیہ رابطے بہتر تعلقات کا پیشہ خیمہ ثابت ہوں گے ، ایٹمی اسلحے کے عدم پھیلاؤ پر یقین رکھتے ہیں ، ہمارا ایٹمی پروگرام پر امن مقصد کیلئے ہے ، دہشتگردی کیخلاف جنگ میں سب سے زیادہ قربانیاں پاکستان نے دی ہیں۔

Related posts