شاہ محمود قریشی سات افراد کے قاتل ہیں‘ مرید قریشی


ملتان (نیوزلائن)شاہ محمود قریشی سات افراد کے قاتل ہیں اور مجھے بھی قتل کی دھمکیاں دیتے ہیں۔ جب بھی شاہ محمود قریشی سے اپنا حق مانگا اس نے مجھے لاش کا تحفہ دیا۔شاہ محمود قریشی درباروں کے تقدس کو پامال کیا اور مجھے عرس کی تقریبات میں شرکت کرنے پرجان سے مارنے کی دھمکیاں دیتا ہے ۔ یہ الزامات کسی غیر نے نہیں لگائے بلکہ تحریک انصاف کے رہنما شاہ محمود قریشی کے سگے بھائی مریدحسین قریشی نے حضرت بہاؤالدین زکریا ملتانی کے سالانہ عرس کے موقع پر بھرے مجمع میں تقریر کرتے ہوئے لگائے۔ مرید قریشی کا کہنا تھا کہ شاہ محمود ملک میں احتساب اورحساب کی بات کرتا ہے میں اس سے گدی کا احتساب مانگتا ہوں۔مجھے دھمکیاں دی گئی ہیں کہ عرس میں آئے تو جان سے جاؤ گے۔انہوں نے شاہ محمودقریشی کو مخاطب کر کے کہا کہ آپ کو دنیا قبروں کا سوداگر کہتی ہے۔ قبرمیں عمران نہیں ایمان ساتھ جائے گا اور قبرمیں پورا پورا حساب ہوگا۔مرید حسین قریشی تقریر سے قبل عرس کی تقریب میں شرکت کیلئے دربارحضرت بہاؤالدین زکریا ملتانی پہنچے اور مریدین سے دربار کو غسل دینے کیلئے عرق گلاب مانگا تو مریدین نے انہیں عرق گلاب دینے سے انکار کر دیا جس کی وجہ یہ بتائی گئی کہ ابھی شاہ محمود قریشی نہیں پہنچے ۔ ان کے آنے پر غسل کیلئے عرق دیا جائے گا۔جس پر مرید حسین قریشی غصے میں آگئے اور انکار کرنے والے کو تھپڑوں سے مارنے لگے۔وہاں موجود مریدین نے بیچ بچاؤ کرایا۔ دربار سے مرید حسین قریشی عرس کی تقریب کے مقام پرپہنچے اورمائیک سنبھال کر تقریر کرنے لگے۔ اس موقع پر پی ٹی آئی کے ایم این اے عامر ڈوگر نے مرید قریشی کو تقریر کرنے سے روکنے کی کوشش کی مگر کامیاب نہ ہوسکے اور مرید قریشی نے اپنی بات کہہ کر ہی مائیک چھوڑا۔ اپنی تقریر مکمل کر کے وہ عرس کی تقریبات چھوڑ کر چلے گئے۔

Related posts

Leave a Comment