قطر کے شہزادے کا خط : حکومت نے آبیل مجھے مار والا کام کیا

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سیدخورشیداحمد شاہ نے کہا ہے کہ حکومت نے سپریم کورٹ میں قطر کے شہزادے کا خط پیش کرکے آبیل مجھے مار والا کام کیا ہے کیونکہ اس کاغذ نے مزید شکوک و شبہات کو جنم دیا ہے۔پارلیمنٹ ہا¶س اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ پاناما پیپرز کے معاملے پر بیٹھے بیٹھے قطر سے بھی لیٹر آگیا، یہ آبیل مجھے مار والا کام ہے کیونکہ اس کاغذ نے شکوک و شبہات کو جنم دیا ہے، احتساب الرحمن اب قطر منتقل ہوگیا ہے، سیف الرحمن کی شریف خاندان سے پہلے ناراضگی تھی تاہم اب معاملات ٹھیک ہو گئے ہیں اور قطر سے آنے والا کاغذ اسی کا کارنامہ ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے طیب اردوان کو خوش کرنے کے لئے پاک ترک اسکولوں پابندی لگائی، ترک فاوٴنڈیشن کے معاملے پر حکومت کو دیکھنا چاہیے اور ترکش اساتذہ کو پاکستان سے نکالنا نہیں چاہیے کیونکہ سیاست اور تعلیم الگ الگ چیزیں ہیں۔خورشید شاہ نے کہا کہ ایشوز سے بچنے کے لئے پی اے سی کا اجلاس ان کیمرہ رکھا گیا،ہم نے پارلیمنٹ پر اعتماد کیا ، پارلیمنٹ ہی سپریم ہے اور پارلیمنٹ سے احتساب کرانے کا رضا ربانی کا موقف خوش آئند ہے۔پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے بائیکاٹ سے متعلق تحریک انصاف کے موقف پر خورشید شاہ نے کہا کہ ہم سیاستدان مودی سے مل سکتے ہیں تو پھر ترک صدر سے کیوں نہیں، ترک صدر کا بائیکاٹ سمجھ سے بالاتر ہے۔

Related posts