مزار کی سجادہ نشینی کے لئے شاہ محمود قریشی کی بھائی سے تلخ کلامی

quraishi حضرت بہاؤ الدین ذکریا ملتانی کے 777ویں 3 روزہ عرس کی تقریبات شروع ٗ مزار کی سجادہ نشینی کے حوالے سے شاہ محمود قریشی اور ان کے بھائی مرید حسین قریشی کے درمیان تلخ کلامی ٗشاہ محمود قریشی مزار کو غسل دینے کی تقریب میں تاخیر سے آئے ٗ مرید حسین نے وجہ دریافت کی تو دونوں بھائیوں میں تلخ کلامی ہوگئی ۔ تفصیلات کے مطابق حضرت بہا الدین زکریا ملتانی کے 777 ویں عرس کی تقریب کا باقاعدہ آغازسجادہ نشین مخدوم شاہ محمود قریشی نے مزارکوعرق گلاب سے غسل دے کرکیا، شاہ محمود قریشی نے مزارپرفاتحہ خوانی کی اورپھولوں کی چادربھی چڑھائی۔ حضرت بہا الدین زکریا ملتانی کے عرس کی تقریبات میں شرکت کے لئے بھارت سے 100 افراد کا قافلہ بھی ملتان پہنچ گیا ہے۔افتتاحی تقریب میں مزارکے سجادہ نشین شاہ محمود قریشی کے بھائی مخدوم مرید حسین قریشی بھی موجود تھے، دونوں بھائیوں کے درمیان سیاسی اختلافات کے بعد مزارکی سجادہ نشینی کے اختلافات بھی کھل کرسامنے آ گئے ۔ عرس مبارک کے موقع پر سجادہ نشین شاہ محمود قریشی جب مزار کو غسل دینے لگے تو اسی دوران ان کے بھائی مرید حسین قریشی آئے جس پر شاہ محمود قریشی نے کہا کہ آپ تاخیر سے کیوں آئے۔جس پر ان کی آپس میں تلخ کلامی ہوئی جس کے بعد مرید حسین قریشی عرس کی تقریبات چھوڑ کر واپس چلے گئے ۔واضح رہے کہ مخدوم مرید حسین قریشی کا تعلق پاکستان پیپلزپارٹی سے ہے جب کہ سجادہ نشین مخدوم شاہ محمود قریشی کا تعلق پاکستان تحریک انصاف سے ہے دونوں بھائیوں کے درمیان مزار کی سجادہ نشینی کا تنازع کافی عرصے سے چلا آرہا ہے

Related posts