نوٹ 7 کی پیداوار اور فروخت مستقل طور پر بند کر رہے ہیں: سام سنگ

مشہور ٹیکنالوجی کمپنی سام سنگ نے گلیکسی نوٹ 7 کی پیداوار اور فروخت مستقل طور پر بند کرنے کا اعلان کر دیا ہے جس کے باعث کمپنی کو 17 بلین ڈالر نقصان ہونے کا اندیشہ ہے۔ یہ اعلان نوٹ 7 خریدنے والے تمام صارفین کو اپنے موبائل بند اور واپس کرنے کے اعلان کے چند گھنٹوں بعد ہی کیا گیا ہے اور کمپنی پالیسی کے تحت دنیا بھر میں فروخت کئے گئے فون واپس لے کر متبادل فون یا صارفین کی رقم واپس کر دی جائے گی تاہم کمپنی کی جانب سے موبائل کی اصل خرابی سے متعلق کچھ نہیں بتایا گیا۔ کمپنی کی جانب سے محفوظ قرار دے کر فروخت کئے جانے والے نوٹ 7 میں آگ لگنے کے واقعات کمپنی کے سب سے ”سمارٹ” فون کے تابوت میں آخری کیل ثابت ہوئے ہیؒں۔ امریکی ریاست کینٹکی میں ایک شخص کے تبدیل شدہ (سام سنگ کی جانب سے محفوظ قرار دئیے جانے والے) نوٹ 7 سے چارجنگ کے دوران دھواں نکلنے لگا اور پھر پورا کمرہ ہی دھویں سے بھر گیا۔ اس کے بعد امریکہ میں ایک پرواز کے دوران نوٹ 7 نے آگ پکڑ لی جس کے باعث تمام مسافروں کو جہاز سے اتار لیا گیا۔ ان خبروں کے سامنے آنے کے بعد کمپنی کو بالآخر یہ نقصان دہ فیصلہ کرنا پڑا۔
سام سنگ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ”صارفین کا تحفظ ہمارے لئے اولین ترجیح ہے، ہم نے گلیکسی نوٹ 7 کی پیداوار اور فروخت مستقل طور پر بند کرنے کا فیصلہ کر لیاہے۔“ کمپنی کو اس اعلان کے بعد اب تقریباً 2.5 ملین نوٹ 7 واپس منگوانے کا مسئلہ درپیش ہے جو صارفین خرید چکے ہیں جبکہ ان فونز کی تعداد کا صحیح اندازہ ہی نہیں جو ابھی تک مارکیٹوں، دکانوں اور دیگر جگہوں پر فروخت کیلئے رکھے گئے ہیں۔ماہرین کے مطابق سام سنگ کی جانب سے اب تک بنائے گئے اور فروخت کئے گئے نوٹ 7 کی تعداد کا اندازہ کیا جائے تو کمپنی کو لگ بھگ 17 بلین ڈالر کا نقصان ہو گا اور صارفین اعتماد کو پہنچنے والے نقصان کا ازالہ بہت دیر سے ممکن ہو سکے گا جبکہ یہ تمام تر معاملہ اثر سام سنگ کے اگلے فون گلیکسی S8 پر بھی اثرانداز ہو گا۔
یاد رہے کہ سام سنگ نے 19 اگست کو نوٹ 7 فروخت کیلئے پیش کیا تھا جس میں بیٹری کے مسائل کے باعث فون پھٹنے کے دنیا بھر میں کئی واقعات رونماءہوئے۔ صرف امریکہ میں ہی ایسے واقعات کی تعداد 100 تک جا پہنچی۔ یہی فون جب ایک جیپ میں پھٹا تو پوری گاڑی ہی جل گئی جس کے بعد ایوی ایشن نے مسافروں کو نوٹ 7 اپنے ساتھ لانے سے منع کر دیا تھا اور پاکستان انٹرنیشنل ائیر لائنز (پی آئی اے) نے بھی اپنے مسافروں کو یہ وارننگ جاری کی تھی۔ان تمام واقعات کے بعدسام سنگ نے نوٹ 7 کی فروخت فوری بند کر دی اور پہلے سے خرید چکے صارفین سے تقریباً 25 لاکھ فون واپس منگوا لئے متبادل فون فراہم کئے تھے جنہیں محفوظ قرار دیا گیا۔ابتدائی طور پر یہ بتایا گیا کہ موبائل فون پھٹنے کے واقعات بیٹری کی خرابی کے باعث پیش آئے ہیں اور کمپنی نے بھی اس کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا تھا کہ بیٹری میں جب اینوڈ ٹو کیتھوڈ آپس میں جڑتے ہیں تو یہ انتہائی زیادہ گرم ہونے کے بعد پھٹ جاتی ہے اور یہ حادثات صرف اور صرف بیٹری کی خرابی کی وجہ سے ہی رونما ہوئے ہیں اور اس کے علاوہ موبائل فون میں کوئی خرابی نہیں ہے۔
کمپنی کی جانب سے صارفین کیلئے بالکل واضح پیغام دیا گیا کہ ”جن صارفین کے پاس پرانا نوٹ 7 یا تبدیل کیا گیا نوٹ 7 فون ہے، وہ اسے آف کر دیں اور استعمال نہ کریں۔“سام سنگ کا کہنا ہے کہ یہ مسئلہ تقریباً 25 لاکھ فونز میں ہو سکتا ہے۔ نوٹ 7 ایس ورژن کے تقریباً 45 ہزار فونز یورپ میں پری سیلز کے ذریعے بیچے گئے جن میں سے 75 فیصد تبدیل کئے جا چکے ہیں تاہم اب کمپنی نے مستقل طور پر اس کی پیداوار اور فروخت بند کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ گلیکسی نوٹ 7 کا مسئلہ سامنے آنے کے بعد سام سنگ کی نئی ڈیزائن کی واشنگ مشین کے پھٹنے کی متعدد شکایات نے بھی کمپنی کی ساکھ کو نقصان پہنچایا۔ امریکہ کی کنزیومر پراڈکٹ سیفٹی کمیشن کے مطابق سام سانگ کی مشینیں جو مارچ2011ءاور اپریل2016ءمیں بنائی گئی تھیں ان میں اچانک پھٹنے کا مسئلہ درپیش ہے جس کے باعث متعدد صارفین نے سام سنگ پر ہرجانے کے دعوے بھی کئے ہیں جس میں ان کا کہنا ہے کہ وہ کپڑے دھورہے تھے جب انہیں دھماکے کی آوازیں سننے کو ملیں۔ ٹیکساس کی ایک خاتون کا کہنا ہے کہ اس کی واشنگ مشین اس زور سے پھٹی کہ اس کے گھر کی دیوار میں سوراخ ہوگئے جبکہ جارجیا کی ایک اور خاتون کا کہنا ہے کہ اسے ایسا محسوس ہوا جیسے اس کے گھر میں کوئی بم پھٹ گیا ہے۔
دلچسپ امر یہ ہے کہ ایک جانب جہاں سام سنگ کو اس تمام تر معاملے سے انتہائی زیادہ(تقریباً 17بلین ڈالر) نقصان برداشت کرنا پڑ رہا ہے وہیں اس کی سب سے بڑی حریف کمپنی ایپل کو اس سے بہت زیادہ فائدہ مل رہا ہے۔ سام سنگ نے ایپل کو مشکل میں ڈالنے کیلئے آئی فون 7 سے چند ہفتے قبل نوٹ 7 متعارف کرایا تھا جسے صارفین کی جانب سے بہت پسند کیا گیا اور بہت سے ماہرین کی جانب سے اسے اب تک کا سب سے زبردست فون بھی قرار دیا گیا۔خوبصورتی اور بہترین فیچرز کے باعث اس فون کی ریکارڈ فروخت بھی ہوئی لیکن جیسے ہی بیٹری کے پھٹنے کے مسائل سامنے آئے کمپنی کی ساکھ کو نقصان پہنچا اور اس کے حصص میں بھی کمی آئی۔ سام سنگ کا خیال تھا کہ وہ خراب نوٹ 7 تبدیل کر کے نقصان کا کسی حد تک ازالہ کرنے میں کامیاب ہو جائے گی لیکن ایسا ممکن نہ ہو سکا اور کمپنی کو بالآخر مستقل طور پر اپنے سب سے ”سمارٹ“ فون کی پیداوار اور فروخت روکنا پڑ گئی ہے۔

Related posts

Leave a Comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.