پارا چنار : دو دھماکوں میں 30 افراد جاں بحق، 100 زخمی

پاڑاچنار(نیوزلائن) کرم ایجنسی کے صدر مقام پاڑا چنار میں ایک مصروف بازار میں یکے بعد دیگرے ہونے والے دو دھماکوں کے بعد آگ لگ گئی جس میں اب تک پولیٹکل انتظامیہ کے مطابق کم از کم 30 افراد جاں بحق ہو گئے ہیں۔ امدادی ٹیموں نے بروقت پہنچ کر آگ پر قابو پانے اور زخمیوں کو ریسکیو کرنے کا کام شروع کیا تاہم بے رحم آگ نے بجھنے سے قبل 16 دکانیں تباہ کر دیں۔ افطار کا وقت قریب ہونے کے باعث لوگ خریداری کیلئے بازار میں بڑی تعداد میں موجود تھے جبکہ متعدد لوگ عید کی خریداری میں بھی مصروف تھے جس کے باعث متعدد لوگ زندگیوں کی بازی ہار گئے۔ واقعے کے بعد پاڑا چنار میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے۔ پاڑا چنار اور اردگرد کے شہروں کے تمام ہسپتالوں میں بھی ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے اور فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔ دوسری جانب، ایجنسی ہسپتال میں علاج معالجے کی سہولتوں کے فقدان کی وجہ سے تمام زخمیوں کا پاڑا چنار میں علاج ممکن نہیں تھا۔ پاڑا چنار پاک افغان سرحد پر واقع علاقہ ہے اور یہ پاکستان کے دہشتگردی سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے علاقوں میں سے ایک ہے جس جگہ دھماکہ ہوا وہاں بازار بھی ہے اور قریب ہی بس اڈا بھی ہے۔ پہلے دھماکے کے بعد جب لوگ امدادی کارروائیوں کیلئے وہاں جمع ہونا شروع ہوئے تو تقریباً 15 منٹ بعد دوسرا دھماکہ ہو گیا جو پہلے کی نسبت زیادہ بڑا دھماکہ تھا۔ آئی ایس پی آر کے مطابق، پاک فوج فوج کے دو ہیلی کاپٹرز پشاور سے پاڑا چنار پہنچے جن کے ذریعے متعدد زخمیوں کو پشاور منتقل کیا گیا۔ پولیٹیکل ذرائع نے بھی 30 افراد کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ شدید زخمیوں کو پشاور منتقل کیا جارہا ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق پاک فوج کے جوان بھی پارا چنار میں امدادی سرگرمیوں میں مصروف ہیں جب کہ آرمی ایوی ایشن کے 2 ہیلی کاپٹر بھی پشاور سے پارا چنار روانہ کردیے گئے ہیں۔ وسری جانب وزیراعظم نوازشریف نے پاراچنار دھماکوں پر شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گرد آسان اہداف کو نشانہ بنارہے ہیں جب کہ کوئی بھی مسلمان ایسے گھناؤنے اقدامات کا تصور بھی نہیں کرسکتا تاہم دہشت گردی کے ایسے واقعات کو ریاست کی طاقت سے کچل دیا جائے گا۔ وزیراعظم نے دھماکے میں جانی نقصان پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق افراد کے درجات کی بلندی اور لواحقین کے لیے صبر کی دعا کرتے ہوئے کہا کہ اللہ تعالیٰ زخمیوں کو جلد صحتیاب کرے جب کہ وزیراعظم نے ملک بھر میں سیکیورٹی انتظامات مزید سخت کرنے کی بھی ہدایت کی۔ چیرمین پی ٹی آئی عمران خان اور چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے بھی پارا چنار دھماکوں کی شدید مذمت کی جب کہ بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ پاراچنارکے شہدا کے ورثا کےغم میں برابرکے شریک ہیں اور دہشتگردی کو نیست ونابود کرنے کے لیے قوم تیار ہوجائے۔

Related posts