پانامہ کیس میں نواز شریف کیخلاف فیصلہ آنے کا امکان

اسلام آباد (نیوزلائن) پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اعتزاز احسن کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نوازشریف کے وکلا نے وزیر اعظم نواز شریف کو یہ بآور کروادیا ہے کہ پانامہ معاملے پر ان کا کیس کمزور ہے۔ نجی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے اعتزاز احسن نے بتایا کہ چوبیسویں ترمیم کی ضرورت بھی اسی لیے پیش آئی ہے کیونکہ نوازشریف کے وکلا نے انہیں بآور کروایا ہے کہ میاں صاحب پانامہ معاملے پر قوم سے خطاب اور قومی اسمبلی میں خطاب میں آپ نے جو موقف لیا تھا اس میں قطری شہزادے کا تذکرہ نہیں ہیں۔اس معاملے پر آپ نے چار مختلف موقف لیے ہیں جس کے تحت اب آپ کا کیس کمزور ہے ۔ اور اسی کے پیش نظر ن لیگ نے چوبیسویں ترمیم لانے کا فیصلہ کرتے ہوئے ارادہ کیا ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل کا حق لیکر آئیں۔ جس کے تحت آرٹیکل 184,3میں ترمیم کریں۔ تاکہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل ہو سکے۔ اعتزاز احسن نے بتایا کہ نواز شریف کو بتا دیا گیا ہے کہ امکانی طور پر سپریم کورٹ کے پانچ ججز کا فیصلہ آپ کے خلاف آ سکتا ہے اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ یہ خبر مجھ تک نواز شریف کے وکالتی سرکل سے پہنچی ہے۔

Related posts