پنجاب حکومت نے 42مشہور برانڈز کے گھی غیر معیاری قرار دے دئیے ہیں

kashmirلاہور(رانا حامد سے)حکومت پنجاب نے 42مشہور برانڈز کے گھی غیر معیاری قرار دے دئیے ہیں۔جن کمپنیوں کا گھی غیر معیاری قرار دیا گیا ہے ان میں بڑے بڑے نام شامل ہیں اور ان کے مالکان انتہائی بااثر ہیں اوراقتدار کے ایوانوں تک ان کی پہنچ بتائی جاتی ہے۔نیوز لائن کے مطابق پنجاب حکومت کے ایک اہم محکمے نے صوبہ بھر سے مختلف کمپنیوں کے گھی کے 71 نمونہ جات لئے۔ ان کے لیبارٹری ٹیسٹ کرائے گئے تو42برانڈزغیر معیاری نکلے
soya۔سرکاری حکام کے مطابقغیر معیاری قرار دئیے گئے گھی اور کوکنگ آئل میں وٹامن ۱ے ناپید ہے اور کم درجہ سپونیفکیشن ہے۔ ان میں بدبودار اور ناقص مصنوعی ذائقے شامل کئے جاتے ہیں اور بلند شرح تیزابیت رکھی گئی ہے۔ جس کی وجہ سے یہ انسانی صحت کیلئے انتہائی حد تک غیر معیاری ہیں اور ان کے استعمال سے انسان صحت تباہ ہو رہی ہے۔ان غیر معیاری گھی و کوکنگ آئل کے استعمال کی وجہ سے شہری مختلف بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں اور مسلسل استعمال جان لیوا ثابت ہو سکتا ہے
sufi۔نیوز لائن کے مطابق گھی و کوکنگ آئل کے حوالے سے بڑا نام ”کسان گھی“ بھی غیر معیاری ہے اور انسانی جان کیلئے انتہائی خطرناک ہے۔کشمیر کینولا آئل‘ شاہ تاج کوکنگ آئل‘ سویا سپریم کوکنگ آئل‘ صوفی سن فلاور کوکنگ آئل‘ تلو بناسپتی‘ شان کوکنگ آئل‘ شان بناسپتی‘ سمارٹ کوکنگ آئل‘ غنی کوکنگ آئل‘ کوکو بناسپتی‘ سویا سپریم بناسپتی‘ اولیو پریمیئم کینولا آئل‘ مومن کوکنگ آئل‘ معیار بناسپتی‘ مومن بناسپتی‘ سلوی سپینش اولیو آئل‘ سیزن بناسپتی‘ سن ڈراپ کوکنگ آئل‘ تلو کوکنگ آئل‘ مان بناسپتی‘ ناز بناسپتی‘ مالٹا بناسپتی بھی شامل ہیں
shah-tajحکومت پنجاب نے ملز اور تاجروں کو ان برانڈز کے گھی اور کوکنگ آئل کی فروخت بند کرنے کی ہدائت کی ہے۔ جبکہ ملز کو یہ غیر معیاری گھی و کوکنگ آئل بنانے پر نوٹس بھی جاری کئے ہیں۔
tullo
shan

Related posts