پنجاب کے ایجوکیشن بورڈز میں اعلیٰ تعلیمی پوزیشنوں کی میچ فکسنگ


اسلام آباد(حامد یٰسین)فکسنگ کا ناسور کھیلوں کے بعد تعلیم میں بھی در آیا۔میچ فکسنگ کے بعد تعلیمی پوزیشن فکسنگ سکینڈل سامنے آیا ہے ۔ایسا کسی ایک علاقے میں نہیں ہو رہا بلکہ پنجاب بھر کے تعلیمی بورڈز میں اعلیٰ تعلیمی پوزیشن لینے کیلئے میچ فکسنگ کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔’’پوزیشن فکسنگ ‘‘میں تعلیمی بورڈز کے اعلیٰ افسران ‘ بااثر پرائیویٹ سکولز مافیا‘ اہم حکومتی شخصیات اور بیوروکریسی کے کل پرزے ملوث ہیں۔نیوزلائن کے مطابق پنجاب میں تعلیمی بورڈز کی اعلیٰ پوزیشنیں میچ فکسنگ کی طرز پر پوزیشن فکسنگ کر کے حاصل کی جارہی ہیں اور یہ سلسلہ آج کا نہیں بلکہ گزشتہ دس سے بارہ سالوں سے چل رہا ہے۔ذرائع کے مطابق لاہور‘ فیصل آباد‘ سرگودھا‘ گوجرانوالہ‘ملتان‘ ساہیوال‘ راولپنڈی‘ ڈی جی خان ‘ بہاولپور تعلیمی بورڈز میں ایک دو کے سوا تمام پوزیشنز میچ فکس کر کے دی جارہی ہیں ۔بورڈ میں پہلی پوزیشنوں کی باقاعدہ بولی لگائی جاتی ہے اور سب سے زیادہ خدمت کرنے والے ادارے کو پہلی پوزیشن سے نواز دیا جا تا ہے۔ اعلیٰ تعلیمی پوزیشن کی فکسنگ صرف میٹرک ہی نہیں انٹر میڈیٹ کے امتحانات میں بھی کی جارہی ہے۔ایجوکیشن فکسنگ کے اس دھندے میں بورڈ زکے چیئرمین‘ سیکرٹری‘ کنٹرولرز کے علاوہ محکمہ تعلیم کے متعدد اعلیٰ افسران اور پوزیشن کے نام پر اپنے ادارے کی تشہیر کے خواہش مند سکول و کالج پرنسپل و مالکان ملوث پائے گئے ہیں۔ذرائع کے مطابق گزشتہ تین سالوں سے پوزیشن فکسنگ کے اس کھیل میں شہرت اور بچوں کا مستقبل’’محفوظ‘‘ کرنے کے خواہاں امیر کبیر والدین بھی شامل ہو گئے ہیں اور وہ بھی اپنے بچوں کیلئے پویشن حاصل کرنے کیلئے فکسنگ کا سہارا لے لیتے ہیں۔فکسنگ کے ناسور نے پنجاب میں تعلیم کا پورا ڈھانچہ تباہ کر دیا ہے اور اس کی بحالی کیلئے تعلیمی ایمرجنسی نافذ کرکے آپریشن کلین اپ کرنے کی ضرورت ہے۔

Related posts

Leave a Comment