پی آئی اے کے قرضے میں حیران کن اضافہ

اسلام آباد(نیوزلائن)پاکستان ایئر لائن (پی آئی اے) نے مختلف ملکی اور غیر ملکی بینکوں سے 13 کروڑ ڈالر کا قرضہ حاصل کرلیا ہے جس کے بعد ادارے پر مجموعی قرضے کا حجم 3 ارب ڈالر سے تجاوز کرگیا۔ فرانسیسی خبر رساں ادارے ‘اے ایف پی’ کی رپورٹ کے مطابق پی آئی اے کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ادارے کو قرض فراہم کرنے والے پاکستانی بینکوں میں یونائیٹڈ بینک لیمٹڈ اور نیشنل بینک آپ پاکستان جبکہ سنگاپور کا بینک ‘کریڈٹ ساس سنگاپور’ شامل ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ‘قرض سے حاصل کی گئی مذکورہ رقم ادارے کے جنرل ورکنگ کیپٹل کی ضروریات اور مسافروں کیلئے دی جانے والی سہولیات کو بہتر بنانے کیلئے استعمال کی جائے گی۔
تاہم پی آئی اے کے ایک افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ حال ہی میں حاصل کیا جانے والا قرضہ سابقہ قرضوں کی ادائیگیوں کیلئے استمعال کیا جاسکتا ہے۔ حال ہی میں لیے گئے قرضے کے ساتھ ہی پی آئی اے کے مجموعی قرضے کا حجم 329 ارب روپے یا 3 ارب 16 کروڑ ڈالر تک پہنچ گیا ہے، ادارے کو سالانہ اربوں روپے کے نقصان کا سامنا ہے اور سال 2015 میں قومی ایئر لائن کو 32 ارب روپے کا نقصان اٹھانا پڑا تھا۔
خیال رہے کہ وزیراعظم نواز شریف کی حکومت نے قومی ایئر لائن کو نجی شعبے کے حوالے کرنے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد ادارے کے 18000 ملازمین نے اس کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے سخت مزاہمت کی۔ حکومت کی جانب سے پی آئی اے کو نجی شعبے کے حوالے کرنے کے اعلان کے بعد رواں سال فروری میں کراچی میں ہونے والے احتجاج کے دوران ادارے کے دو ملازمین ہلاک ہوگئے تھے۔ پولیس کا دعویٰ تھا کہ پی آئی اے ہیڈ آفس کے باہر ہونے والے مظاہرے کے دوران مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے کی جانے والی کوششوں میں ہلاکتیں ہوئیں۔ جس پر حکومت نے قومی ایئر لائن کو نجی شعبے کے حوالے کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا

Related posts