ن لیگ فوری نئے آرمی چیف کا تقرر کرنے پر آمادہ

2 وزیراعظم میاں نوازشریف کے قریبی ساتھیوں نے وزیراعظم کومشورہ دیاہے کہ آئندہ 48گھنٹوں میں نئے آرمی چیف کاتقررکردیاجائے تاکہ موجودہ فوجی قیادت کا کردار محدود ہو جائے یہ مشورہ ایک اعلیٰ سطحی اجلا س میں دیاگیااوراسی اجلا س میں وزیراعظم کے ساتھیوں کایہ بھی کہناتھاکہ حکومت کو فوج سے زیادہ سپریم کورٹ سے خطرہ ہے ،یکم نومبرکوسپریم کورٹ کامزاج دیکھ کرلائحہ عمل مرتب کیاجائیگاجبکہ ایک اوررہنماکی تجویز تھی کہ چیف جسٹس کے گزشتہ چندروزکے ریمارکس دیکھتے ہوئے انہیں بنچ سے الگ کرنے کی درخواست دے دینی چاہئے لیکن اجلاس کے شرکاءکی اکثریتی رائے تھی کہ حکومت کواس نازک موقع پرعدالتی محاذآرائی سے گریزکرناچاہئے۔ اجلاس میں وزیراعظم کوبتایاگیاکہ طاہرالقادری سے ایک دفاعی تجزیہ کارنے ملاقات کی تھی جس نے انہیں یہ پیغام دیاکہ موجودہ احتجاج میں شرکت عمران خان نہیں بلکہ ملک بچانے کے مترادف ہے

Related posts