خبر لیکس:تحریک انصاف اورعوامی تحریک نے کمیٹی مسترد کردی

پاکستان تحریک انصاف اور عوامی تحریک نے قومی سلامتی کے اجلاس کی خبر لیک ہونے کے معاملے پر وزیرداخلہ کی مجوزہ کمیٹی کو مسترد کردیا ہے۔
images-2پاکستان تحریک انصاف اور عوامی تحریک نے قومی سلامتی کے اجلاس کی خبر لیک ہونے کے معاملے پر وزیرداخلہ کی جانب سے ریٹائرڈ جج کی سربراہی میں مجوزہ کمیٹی کو مسترد کردیا ہے۔ اسلام آباد میں میڈیا سے بات کے دوران ترجمان تحریک انصاف نعیم الحق کا کہنا تھا کہ انکوائری وزیراعظم کے اسٹاف کے خلاف ہے تو یہ وزیراعظم کے خلاف ہی ہے لہذا وزیراعظم کو انکوائری کمیٹی بنانے کااختیار نہیں ہوناچاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ کمیٹی کاسربراہ چیف جسٹس آف پاکستان کو ہونا چاہیے اور رپورٹ بھی ان کے پاس جانی چاہیے جب کہ ماڈل ٹاؤن واقعہ کی انکوائری ریٹائرڈ جج کی سربراہی میں ہوئی تھی جس کی رپورٹ حکومت نے دبالی۔
tahir-ul-qadri
دوسری جانب عوامی تحریک کے سربراہ طاہر القادری کا اپنے بیان میں کہنا تھا کہ وزیر اعظم کی مرضی کے بغیر وزیر اعظم ہاؤس سے اتنی بڑی واردات نہیں ہو سکتی جب کہ سرل لیکس کی انکوائری ریٹائرڈ جج سے کروانا قومی سلامتی کے ساتھ ایک اور مذاق ہے کیونکہ کلین چٹ کے لیے ریٹائرڈ جج لایاجا رہا ہے۔
واضح رہے کہ گزشتہ روز پریس کانفرنس کے دوران چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ سرل لیکس کی تحقیقات کے لیے کمیٹی کے نام وزیراعظم کو پیش کردیئے ہیں جب کہ کمیٹی کے سربراہ ہائی کورٹ کے ریٹائرڈ جج ہوں گے اوراس میں حساس اداروں کے افسران بھی شامل ہوں گے اور امید ہے کہ پیر تک کمیٹی تشکیل دے دی جائے گی

Related posts