پاکستانی فوٹو جرنلسٹ معاشرے کا مثبت امیج پیش کریں‘ ڈاکٹر سلمیٰ عنبر


\فیصل آباد(نیوزلائن)جی سی یونیورسٹی شعبہ ابلاغ عامہ کی انچارج ڈاکٹر سلمیٰ عنبر کا کہنا ہے کہ فوٹو جرنلزم اخبارات کا انتہائی اہم جزو ہے۔ فوٹو گرافی کے ذریعے معاشرے کا بہترین امیج پیش کر سکتے ہیں ۔ پاکستان میں بے انتہا خوبصورتی ہے ہمارے فوٹو جرنلسٹوں کو چاہئے کہ معاشرے کا مثبت امیج دنیا کے سامنے لائیں ۔منفی تاثرکی بجائے معاشرے کے حسن کو دنیا کے سامنے پیش کرنے کیلئے پاکستانی فوٹو جرنلسٹوں کی خصوصی تربیت ہونی چاہئے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز ماس کمیونیوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے زیر اہتمام فوٹو جرنلزم کے حوالے سے خصوصی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ورکشاپ میں ڈین سوشل سائنسز ڈاکٹر مغیث احمد‘ معروف فوٹو جرنلسٹ آغا رضوان علی‘ نجی کمپنی کے نمائندوں قطب علی اور عدنان نذیر نے بھی شرکت کی۔ڈاکٹر سلمیٰ عنبر نے کہا کہ قلم سے لکھنے والے سے زیادہ تصویر سے منظر کشی کرنے والے پر زیادہ ذمہ داری عائد ہوتی ہے ۔ تصاویر کے ذریعے معاشرے کے رنگ فوٹو جرنلسٹ آغا رضوان علی نے طلبا و طالبات سے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان کا دنیا بھر میں مثبت تاثر فوٹوگرافی کے ذریعے اجاگر کیا جاسکتا ہے ۔ مغرب کے مسائل ہم سے کہیں زیادہ ہیں جبکہ مثبت فوٹو جرنلزم نے دنیابھر میں مغرب کا تاثر ایک امن پسند اور مہذب دنیا کے طور پر پیش کیا ہے ۔ اس مو قع پر کمپنی کے نمائندہ سید قطب زبیر اور ٹیکنیکل ایڈوائزر عدنان نذیر نے بھی خطاب کیا جبکہ اختتام پر طلبا و طالبات میں سرٹیفکیٹ تقسیم کئے گئےدکھانے والے صحافیوں کو اپنی ذمہ داریاں کا احساس کرنا چاہئے۔ اس موقع پر

Related posts

Leave a Comment