پاکستان میں ایڈزخطرناک شکل اختیار کر گیا‘17ہزار مریض رجسٹرڈ


اسلام آباد(نیوز لائن)لاعلاج موذی مرض ایڈز پاکستان میں تیزی سے پھیلنے لگا۔روک تھام کیلئے مناسب حکومتی اقدامات نہ ہونے کی وجہ سے ایڈز خطرناک انداز میں ملک بھر میں پھیل رہا ہے۔ ملک بھر میں ایڈز کے رجسٹرذ مریضوں کی تعداد 17ہزار سے زائد ہے جبکہ حقیقی تعداد اس سے بہت زیادہ بتائی جا رہی ہے۔طبی ماہرین کے مطابق ایڈز کا مرض پھیلنے کی وجوہات بے راہروی اور غیر فطری جنسی حرکات کا پھیلنا بتایا جا رہا ہے جبکہ انتقال خون میں مناسب احتیاط نہ کئے جانے بھی اس کی ایک بڑی وجہ ہے۔وفاقی وزارت صحت کے مطابق ملک بھر میں 17224ایڈز کے مریض رجسٹرڈ ہیں مگر ان میں سے بھی پچاس فیصد کے لگ بھگ زیر علاج ہیں باقی زیر علاج نہیں ہیں۔ملک میں ایدز کے سب سے زیادہ6803 مریض پنجاب میں رجسٹرڈ ہوئے۔ان میں سے 3741مختلف شہروں کے ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ سندھ میں 5646رجسٹرڈ مریضوں میں سے 2257زیر علاج‘ کے پی میں 2085رجسٹرڈ مریضوں میں سے 917زیرعلاج‘ بلوچستان میں 526مریضوں میں سے 303زیر علاج ہیں۔ذرائع کے مطابق پاکستان میں روائتی سماجی مسائل کی وجہ سے لوگ ایڈز کے مرض میں مبتلا ہونے کے باوجود خود کو رجسٹرڈ نہیں کرواتے۔ مرض کو چھپا کر رکھتے ہیں اور اس کے علاج معالجہ کیلئے بھی مناسب اقدامات نہیں اٹھاتے۔جبکہ حکومتی سطح پر بھی اس موذی مرض کے حوالے سے عوامی آگاہی بڑھانے اور مرض روک تھام کیلئے مناسب کام نہیں ہو رہا جس کی وجہ سے مرض تیزی سے پھیل رہا ہے۔

Related posts