پارلیمنٹ لابی میں جمہوری اقدار دفن‘ ارکان اسمبلی گتھم گتھا‘ گالم گلوچ



اسلام آباد(نیوزلائن)پارلیمنٹ ہاؤس میں جمہوری تماشا‘ اقدار کی حرمت یقینی بنانے کا حلف اٹھانے والے تمام اخلاقی اور پارلیمانی روایات کو روندنے لگے۔پارلیمنٹ لابی میں مسلم لیگ (ن) اور پاکستان تحریک انصاف کے اراکین گالم گلوچ کے بعد آپس میں گتھم گتھا ہو گئے ٗخواتین ارکان کی موجودگی میں کھلے عام ناشائستہ زبان کا استعمال ٗ پی ٹی آئی رہنما مراد سعید نے ن لیگی رہنما جاوید لطیف کو مکا دے مارا ٗایک دوسرے کو دھمکیاں دیں۔قومی اسمبلی اجلاس میں کی گئی تقریروں پرتلخ کلامی ہوئی تاہم اجلاس کے بعد جاوید لطیف اور مراد سعید پارلیمنٹ کی لابی میں پہنچے تو مراد سعید (ن) لیگ کے رکن جاوید لطیف کی طرف بڑھے اور کہا کہ آپ ہوتے کون ہیں مجھ سے اس طرح بات کرنے والے اور ہماری لیڈرشپ پر غداری کے فتوے لگانے والے جس کے بعد دونوں کے درمیان تلخ کلامی ہوئی اور پھر ہاتھا پائی بھی ہو گئی اس موقع پر پی ٹی آئی رہنما مراد سعید شدید غصے میں آگئے اور لیگی رہنما جاوید لطیف کو مکا دے مارا دونوں اراکین کے درمیان ہاتھا پائی کو پارلیمنٹ لابی میں موجود افراد نے رکوایا اور معاملے کو رفع دفعہ کروایا۔ جاوید لطیف کا کہنا ہے کہ لابی میں مراد سعید 10 سے 15 نان اسمبلی ممبرز کے ساتھ میری جانب بڑھا اور مجھے گالیاں دینا شروع کردیں۔مراد سعید نے واقعہ کی تردید نہیں کی تاہم ان کاکہنا تھا کہ جاوید لطیف نے آواز کسی تھی جس کے ردعمل میں وہ جھگڑے ہیں۔سیاسی ماہرین ن لیگی اور پی ٹی آئی رہنماؤں کو جمہوری اقدار کے منافی اور جمہوری روایات کا جنازہ نکالنے کے مترادف قرار دے رہے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ارکان اسمبلی میں برداشت ہی نہیں ہے تو وہ کس منہ سے جمہوریت کی بات کرتے ہیں۔ جمہوری روایات کا خون کرنے والوں کیلئے پارلیمنٹ میں کوئی جگہ نہیں ہونی چاہئے

Related posts