ترکی میں ریفرنڈم :طیب ارگان کو واضح برتری


استنبول (نیوزلائن) ترکی میں ہونے والے ریفرنڈم میں ووٹوں کی99فیصد گنتی مکمل ہوگئی ہے ، طیب ارگان کو واضح برتری، اکثریت نے ریفرنڈم کی حمایت کردی۔ نتائج کے مطابق51.8فیصد لوگوں نے ریفرنڈم کی حمایت کی ہے۔ 5کروڑ 55لاکھ ترک عوام نے ریفرنڈم میں حصہ لیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ترکی میں جاری ریفرنڈم کے ابتدائی نتائج سامنے آنا شروع ہو گئے ہیں جن کے مطابق صدر رجب طیب اردگان کو ملک میں حکومت کرنے کی مکمل طاقت مل جائے گی۔اس حمایت کے بعد طیب اردگان کو ترکی میں کابینہ کے وزرا، ڈگری جاری کرنے، سینیئر ججوں کے چناؤ اور پارلیمنٹ کو برخاست کرنے کے اختیارات حاصل ہو جائیں گے۔اس ریفرنڈم کی کامیاب کے بعد اردگان 2029ءتک صدارت کے عہدے پر قائم رہ سکیں گے۔ ریفرنڈم کی کامیابی کے بعد نئی اصلاحات کے ذریعے ترکی کی وزارت عظمیٰ کا عہدہ موجودہ وزیراعظم بن علی یلدرم کے بجائے کسی اور شخصیت کے پاس جائے گا یا پھر اس عہدے کے جگہ نائب صدر لیں گے۔ ترک وزیر اعظم بن علی یلدرم نے غیر سرکاری نتائج کی بنیاد پرکہا ہے انھیں ملک میں ہونے والے ریفرنڈم میں فتح حاصل ہو گئی ہے۔ اس اعلان کے فورا بعد صدارتی محل کے باہر ہزاروں افراد جمع ہو چکے ہیںاور ریفرنڈم کی کامیابی پر جشن منار ہے ہیں، ترکی کے سرکاری ٹی وی پر ریفرنڈم کی کامیابی پر لوگوں کے جشن کو براہ راست دکھایا جا رہا ہے۔ اس ریفرنڈم کی کامیاب کے بعد اردگان 2029ءتک صدارت کے عہدے پر قائم رہ سکیں گے۔ ریفرنڈم کی کامیابی کے بعد نئی اصلاحات کے ذریعے ترکی کی وزارت عظمیٰ کا عہدہ موجودہ وزیراعظم بن علی یلدرم کے بجائے کسی اور شخصیت کے پاس جائے گا یا پھر اس عہدے کے جگہ نائب صدر لیں گے۔ ترکی میں صدارتی نظام سے متعلق ریفرنڈم میں ووٹنگ کا ٹرن آؤٹ 86 فیصد رہا۔

Related posts