نواز شریف کو استعفیٰ کیلئے مجبور کردیںگے، اعتزاز احسن

اسلام آباد(نیوزلائن)سینیٹر اعتزاز احسن کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ نے ٹھیک بولا تھا کہ یہ فیصلہ مولوی تمیزالدین کیس کی طرح صدیوں یاد رہے گا، جو فیصلہ اعلیٰ ترین عدالت کے ججز نہ کرسکے، وہ انیس اور بیس گریڈ کے افسران کیسے کریں گے، ہم جے آئی ٹی کو مسترد کرتے ہیں۔ سینیٹ کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفت گو میں سینیٹر اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ یہ لوگ سپریم کورٹ پر حملہ کرتے ہیں، نواز شریف کی حکومت پر ہمیشہ ہلکا ہاتھ رکھا جاتا ہے، ہم جے آئی ٹی کو مسترد کرتے ہیں، جے آئی ٹی بنانے کے فیصلے کو مسترد کرتے ہیں، لوگ مولانا تمیز الدین کا فیصلہ آج تک نہیں بھولے، عدالتی فیصلہ واضح طور پر وزیراعظم کو نااہل بتاتی ہے۔ اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ ججز نے کہا کہ قطری کاغذ ردی کا ٹکڑا ہے،ہم اسے رد کرتے ہیں، ایڈیشنل ڈائریکٹر ایف آئی اے چوہدری نثار کا بندہ ہے، گورنر اسٹیٹ بینک ان کے گھر کا فرد ہے،ایس پی ایس سی بھی انہیں کا لگایا ہوا فرد ہے،آئی ایس آئی سے ان کا خاندانی تعلق ہے، مریم نواز کو جے آئی ٹی سے پہلے ہی بری کردیا گیا، نواز شریف کو استعفیٰ دینے کیلئے مجبور کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ان لوگوں کا ماضی ایسے کمیشن اور رپوٹس سے بھرا پڑاہے، چاہے وہ ماڈل ٹاؤن کا واقعہ ہو یا سپریم کورٹ پر حملہ کرانے کا، ان کے خلاف ہمیشہ نرم رویہ رکھا گیا ہے۔اعتزاز نے کہا کہ انیس اور بیس گریڈ کے افسران کیسے ان کے گھرانے کا ٹرائل کریں گے، اور وہ مریم نواز جسے اس تمام تر معاملے میں کلین چٹ مل گئی ہے، جس کا تمام تر معاملے میں کلیدی کردار رہا ہے، اسے بالکل چھوڑ دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ ججز صاحبان نے ٹھیک ہی بولا تھا کہ کیس کا ایسا فیصلہ آئے گا کہ مدتوں یاد رہے گا، واقعی مولوی تمیزالدین کی طرح اس کیس کا فیصلہ بھی مدتوں یاد رہے گا۔

Related posts