سابق وزیر اعظم پاکستان چوہدری شجاعت حسین اراضی فراڈ میں ملوث نکلے


فیصل آباد(ندیم جاوید سے)سابق وزیر اعظم پاکستان اور مسلم لیگ ق کے سربراہ چوہدری شجاعت حسین بھی پراپرٹی فراڈ میں ملوث نکلے۔ چوہدری شجاعت اور ان کے بھائیوں نے ایوب کالونی فیصل آباد کے ایک پلاٹ کو کئی کئی جگہ فروخت کرکے”نوٹ کھرے“کر لئے۔ لاکھوں روپے خرچ کرکے بھی شہری اراضی کے مالک نہ بن سکے۔اور عدالتوں کے دھکے کھانے پر مجبور ہیں۔نیوزلائن کے مطابق سابق وزیر اعظم پاکستان اور پی ایم ایل کیو کے سربراہ چوہدری شجاعت حسین اور ان کے بھائی وجاہت حسین و دیگر پراپرٹی فراڈ میں براہ راست ملوث پائے گئے ہیں۔ دستاویزات کے مطابق جھنگ روڈ پر ایوب ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے قریب واقع ایوب کالونی چوہدری شجاعت کی فیملی کی ملکیت تھی اور انہوں نے اس کے پلاٹ بنا کر فروخت کئے۔ چوہدری شجاعٹ حسین نے کالونی کے کئی ایک پلاٹوں کو دو اور دو سے زائد افراد کو فروخت کردیا جس سے پیدا ہونے والے جھگڑے دہائیاں گزرنے کے باوجود ابھی تک چل رہے ہیں۔ بعض مقدمات تو ابھی تک عدالتوں میں زیر سماعت ہیں۔ذرائع کے مطابق ایوب کالونی کے بعض اراضی فراڈ کے معاملات میں سابق سٹی ناظم فیصل آباد ممتاز علی چیمہ کا نام بھی سامنے آیا ہے ان کے علاوہ بھی فیصل آباد کی کئی ایک سرکردہ شخصیات اراضی فراڈ میں ملوث ہیں اور عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہے ہیں۔

Related posts