دوسرا ٹیسٹ : پہلے دن ویسٹ انڈیز کے 6 وکٹوں پر 286 رنز

 

اسلام آباد(نیوزلائن) ویسٹ انڈیز نے پاکستان کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میچ کی پہلی اننگز میں 6 وکٹوں کے نقصان پر 286 رنز بنالیے۔ پاکستان نے باؤلرز کی عمدہ کارکردگی کی بدولت ویسٹ انڈیز کے بلے بازوں کو دباؤ میں رکھا اور 154 کے مجموعی اسکور پر میزبان ٹیم کے 6 کھلاڑی پویلین لوٹ چکے تھے۔ تاہم روسٹن چیز کی شاندار سنچری کی بدولت ویسٹ انڈیز کی پوزیشن مستحکم ہوگئی جبکہ جیسن ہولڈر اور روسٹن چیز نے ساتویں وکٹ کی شراکت میں 132 رنز کا اضافہ کیا۔پہلے دن کا کھیل ختم ہوا تو جیسن ہولڈر 58 اور روسٹن چیز 131 رنز پر کھیل رہے تھے۔ بارباڈوس میں کھیلے جا رہے تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے دوسرے میچ میں ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کیلئے سازگار وکٹ پر پہلے اپنے بلے بازوں کو صلاحیتوں کے اظہار کا موقع فراہم کیا ہے۔ ویسٹ انڈیز کی اننگز کا آغازانتہائی مایوس کن تھا اور 12 کے مجموعی اسکور پر کریگ بریتھ ویٹ محمد عامر کو وکٹ دے بیٹھے جبکہ ایک رن بعد ہی محمد عباس نے شیمرون ہٹمیئر کو پویلین واپسی پر مجبور کردیا۔ شے ہوپ اور کیرن پاول نے تیسری وکٹ کیلئے محتاط طریقے سے اسکور آگے بڑھانا شروع کیا لیکن 37 کے مجموعے پر ہوپ کی اننگز بھی تمام ہوئی۔ تین وکٹیں گرنے کے بعد کیرن پاول کا ساتھ نبھانے روسٹن چیز آئے اور دونوں نے کھانے کے وقفے تک مزید کوئی وکٹ نہ گرنے دی۔ دونوں کھلاڑیوں نے چوتھی وکٹ کیلئے 65 رنز جوڑے لیکن اس سے قبل کہ یہ شراکت مزید خطرناک ثابت ہوتی، محمد عامر نے ٹیم کو اہم کامیابی دلاتے ہوئے پاول کو میدان بدر کردیا جبکہ پانچ رنز کے اضافے سے محمد عباس نے وشال سنگھ کو یونس خان کی مدد سے قابو کر کے پاکستان کو پانچویں کامیابی دلائی۔ روسٹن چیز نے دوسرے اینڈ سے عمدہ بیٹنگ کا سلسلہ جاری رکھا اور شین ڈاؤرچ کے ساتھ چھٹی وکٹ کیلئے 47 رنز جوڑ کر ابتدائی نقصان کا ازالہ کرنے کی کوشش کی لیکن ڈیبیو کرنے والے شاداب خان نے اپنے ٹیسٹ کیریئر کی پہلی وکٹ حاصل کر کے ویسٹ انڈیز کو چھٹا نقصان پہنچایا۔ جب چائے کا وقفہ ہوا تو ویسٹ انڈیز نے چھ وکٹ کے نقصان پر 166 رنز بنائے تھے جبکہ چیز 70رنز بنا کر وکٹ پر موجود تھے۔ پاکستان کی جانب سے محمد عامر اور محمد عباس نے دو دو وکٹیں حاصل کیں جبکہ اسپنرز یاسر شاہ اور شاداب نے ایک ایک وکٹ اپنے نام کی۔ اس سے قبل ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور اپنی ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی جبکہ پاکستان نے ایک تبدیلی کرتے ہوئے وہاب ریاض کو آرام دے کر شاداب خان کو ڈیبیو کرایا۔ یاد رہے کہ پاکستان نے سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ جیت کر 1-0 کی برتری حاصل کرلی ہے اور دوسرا ٹیسٹ میچ جیتنے کی صورت میں پاکستان پہلی مرتبہ ویسٹ انڈیز میں ٹیسٹ سیریز جیتنے کی تاریخ رقم کر سکتا ہے

Related posts