عالمی اداروں کو بھی پاکستانی رنگ چڑھ گیا‘ میرٹ پالیسی کھوہ کھاتے

اسلام آباد(نیوزلائن)اقوام متحدہ اور دیگرعالمی اداروں کو بھی پاکستان آکر ”پاکستانی رنگ“ چڑھ گیا۔ ریکروٹمنٹ‘ وظائف‘ سروے‘ اور دیگر آپریشنل و انتظامی معاملات میں میرٹ کو مسلسل نظرانداز کی جارہی ہے اور پاکستان میں کام کے دوران یہ ادارے غیرجانبداری اور ”سب کیلئے یکساں مواقع“ کی اپنی ہی بنائی ہوئی پالیسی کو طاق میں رکھ چکے اور جانبداری سے کام لیتے ہوئے مخصوص بیک گراؤنڈ رکھنے والوں کو مواقع فراہم کئے جاتے ہیں۔ نیوزلائن کے مطابق پاکستان میں سرکاری اور نجی اداروں میں ریکروٹمنٹ‘ وظائف‘ سروے‘ انٹرن شپ‘ آپریشنل و انتظامی معاملات میں میرٹ پالیسی کو نظرانداز کرنے اور جانبداری‘ اقرباء پروری‘ مخصوص ٹولے کو نوازنے کی شکایات عام ہیں۔ مگر اب رپورٹس اور شکایات سامنے آرہی ہیں کہ اقوام متحدہ اور اس کے ذیلی ادارے یو این ویمن‘ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن‘ یونیوسکو‘ یو این ڈی پی‘ سی ایس آئی‘ اور متعدد دیگر عالمی ادارے‘ انٹرنیشنل این جی اوز‘ ملٹی نیشنل کمپنیزپاکستان میں اپنے معاملات چلاتے ہوئے میرٹ کو مسلسل نظرانداز کر رہی ہیں۔ میرٹ‘ غیرجانبداری‘ سب کیلئے یکساں مواقع صرف ان کمپنیوں کے نعرے بن کر رہ گئے ہیں عملی طور پر اقوام متحدہ سمیت اکثریتی عالمی ادارے ایک مخصوص ٹولے کے گرد گھومتے ہیں اور ان کے تمام معاملات مخصوص نظریات اور سوچ کے حامل افراد کے ساتھ نتھی ہو چکے ہیں۔

Related posts