جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے نیو کیمپس میں رنگین محفل‘ اہم شخصیات کی خصوصی شرکت

فیصل آباد(نیوزلائن)جی سی یونیورسٹی فیصل آباد میں شراب شباب کا مخلوط رت جگا‘طلباء و طالبات اور یونیورسٹی کی اہم میل و فی میل شخصیات رات بھر جام لنڈاتے اور رقص بدتمیزی کرتے رہے۔یونیورسٹی کی ایک اہم شخصیت کے زیرکنٹرول ہونیوالی ”محفل خاص“ یونیورسٹی کے نیو کیمپس میں سجائی گئی۔ پارٹی کے اختتام پر شراب کے نشے میں دھت طلباء کی ریس لگاتی دس کاریں آپس میں ٹکرا گئیں اور”رنگین محفل“ سجانے کے بعد واپس جاتے امیر زادے اور انکی فی میل پارٹنرززخمی ہو کر ہسپتال پہنچ گئے۔نیوزلائن کے مطابق جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے نیو کیمپس میں شراب و شباب کی رنگین محفل سجائی گئی۔ پارٹی کا اہتمام جامعہ کی ایک اہم اور نوجوان شخصیت نے کیا تھا۔ پارٹی میں شرکت خصوصی ریفرنس کے ذریعے کی گئی اور شریک ہونے کیلئے امیر زادوں کو خصوصی پاس جاری کئے گئے۔ پارٹی سنگل کی شرکت ممنوع تھی اور پارٹنر ساتھ لانے کی شرط رکھی گئی تھی۔پارٹی میں یونیورسٹی کے متعدد مردوخواتین فیکلٹی و نان فیکلٹی شخصیات بھی شریک تھیں۔ پارٹی کے دوران رات بھر جام لنڈاتے او ر انسانیت سوز حرکات کی جاتی رہیں۔شراب و شباب کی اس محفل میں کپڑوں کی قید سے نکلنے سمیت ہر غیر اخلاقی حرکات کی اجازت تھی جبکہ کھلے عام جنسی فعل کرنے کی بھی کھلی چھٹی تھی۔ ”پارٹی“ کا بھانڈا محفل کے اختتام پر نشے میں دھت امیرزادوں کی ”کپل کار ریس“ نے پھوڑ دیا۔امیرزادوں کی اپنی پارٹنرز کیساتھ رات گئے کار ریس کے دوران دس کاریں آپس میں ٹکرا گئیں اور ان میں سوار لڑکیاں اور لڑکے شدید زخمی ہوکر ہسپتال پہنچ گئے۔حادثے میں زخمی لڑکیوں کو ”سائیڈلائن“ کرکے اور ”مدا“ غائب کرنے کیلئے یونیورسٹی کا افتخار نام کا سکیورٹی آفیسر رات بھر سرگرم رہا۔ایک اہم شخصیت کے اشارے پر الائیڈ ہسپتال کی انتظامیہ نے بھی اس سے مکمل تعاون کیا اور زخمی لڑکیوں کا کہیں اندراج کئے بغیرانہیں ابتدائی طبی امداد فراہم کرکے سکیورٹی آفیسر کی معاونت میں ایک پرائیویٹ ہسپتال منتقل کروا دیا۔

Related posts