ٹیوٹا سنٹرز میں طلبہ طویل لوڈشیڈنگ اور شدید گرمی میں کلاسز لینے پرمجبور

لاہور(نیوزلائن)ٹیوٹا کی جانب سے دعوے اور اعلانات تو بہت کئے جاتے ہیں مگر عملی طور پر ٹیوٹا سنٹرز میں حالات بالکل اس کے الٹ ہیں۔طلبہ کو ہر ممکن سہولت کی فراہمی کیساتھ ٹیکنیکل ایجوکیشن فراہم کرنے کیلئے بنائے گئے ٹیوٹا کو پنجاب بھر میں بہترین مقامات پر کالجز اور سکولز فراہم کئے گئے ہیں مگر ٹیوٹا ان کی حالت زار مزید بہتر بنانے میں ناکام رہا ہے اور مزید سہولتیں تو کیا فراہم کرتا میسر انفراسٹرکچر بھی تباہ کرنے پر تلا ہوا ہے۔ پنجاب بھر میں ٹیوٹا سنٹرز میں جنریٹر نام کی کوئی چیز نہیں پائی جاتی۔ دوران کلاسز بجلی بندش معمول ہے اور طویل دورانیہ کی بجلی بندش کے دوران ہی طلبہ کلاسز لینے پر مجبور ہیں۔ رمضان کے دوران بھی بجلی بند رہتی ہے اور شدید حبس اور گرمی کے دوران طلبہ کو کوئی ریلیف نہیں دیا جاتا۔ ذرائع کے مطابق پنجاب بھر میں ٹیوٹا سنٹرز میں جنریٹر نہیں ہیں اور بجلی بندش کے دوران پنکھے و لائٹس جلانے کا کوئی انتظام سرے سے ہے ہی نہیں۔ بد انتظامی کے اس اعلیٰ ترین مظاہرے کے باوجود ٹیوٹا سنٹرز بہترین قرار دئیے گئے ہیں۔

Related posts