حکومت ذمہ داری نبھانے میں ناکام‘سرکاری ہسپتال ٹھیکے پر دینے کا فیصلہ

فیصل آباد(ندیم جاوید)پنجاب حکومت عوام کوصحت کی معیاری سہولیات فراہم کرنے میں بری طرح ناکام ثابت ہوئی ہے اور ہسپتالو ں کی حالت زار دس سالوں میں بھی بہتر نہیں بنا سکی۔ نیوزلائن کے مطابق دس سال سے پنجاب کے اقتدار پر قابض مسلم لیگ ن کی حکومت نے پنجاب کی عوام کو صحت کی سہولتیں فراہم کرنے میں اپنی ناکامی چھپانے کیلئے پنجاب بھر کے تمام بڑے سرکاری ہسپتالوں کو نجی ترک کمپنی کو ٹھیکے پر دینے کا فیصلہ کیا ہے۔نجی کمپنی کیساتھ حکومت کے تمام معاملات طے پا چکے ہیں اور اس پر عمل درآمد شروع بھی ہو چکا ہے۔ نیوزلائن کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے فیصلہ کیا ہے کہ پنجاب کے تمام بڑے سرکاری ہسپتال ایک نجی ترک کمپنی کو ٹھیکے پر دیدئیے جائیں۔نجی ترک کمپنی کو ترک حکومت کی گارنٹی بھی حاصل نہیں ہے تاہم اس کمپنی کے ڈائریکٹرز کے میاں شہباز شریف کے دوستانہ تعلقات ہیں اورکمپنی ذمہ داریاں نبھانے اورپنجاب حکومت اس کمپنی کوسرکاری ہسپتال ٹھیکے پر دینے کیلئے تیار ہے۔ذرائع کے مطابق نجی کمپنی کو ٹھیکے پر دینے کے بعد صوبائی حکومت کی طرف سے ہسپتالوں کو ملنے والے اسی کمپنی کی ڈسپوزل پر دئیے جائیں گے ۔ ہسپتالوں کے تمام انتظامی امور ‘ ڈاکٹرز ‘ پیرامیڈیکل سٹاف‘ نرسوں اور دیگر عملے کو رکھنے اور انہیں نکالنے کا اختیار ترک کمپنی کو دیدیا جائے گا۔ کمپنی کسی بھی ڈاکٹر یا سٹاف ممبر کے خلاف کارروائی کر سکے گی۔ کمپنی ڈاکٹرز سمیت کسی بھی سٹاف ممبر کو ہسپتال سے فارغ کرنے اور اسے پنجاب حکومت کو واپس کرنے کا اختیار رکھتی ہو گی۔ اس کے علاوہ تمام انتظامی اقدامات کرنے کیلئے بھی کمپنی مکمل طور پر بااختیار ہو گی۔ ذرائع کے مطابق میاں شہباز شریف اس کمپنی کیساتھ تمام معاملات طے کر چکے ہیں اور پنجاب حکومت کا یہ منصوبہ عمل درآمدی مرحلے میں ہے۔ ملتان میں ایک بڑا ہسپتال تجرباتی طور اس کمپنی کو دیا بھی جا چکا ہے ۔ دوسرے مرحلے میں فیصل آباد میں الائیڈ ہسپتال اورفیصل آبادانسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی کا چارج اس کمپنی کو دیا جائے گا۔ نجی ترک کمپنی کے متعلقین ہسپتالوں کا دورہ کرکے معاملات کا جائزہ لے چکے ہیں اور آئندہ چند ماہ میں دونوں ہسپتال ترک کمپنی کو دئے دئیے جائیں گے۔ اگلے مرحلے میں لاہور‘ راولپنڈی‘ سرگودھا‘ گوجرانوالہ‘ بہاولپور کے ہسپتالوں کو اس کمپنی کے حوالے کرنے کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں۔

Related posts