پولیس انسپکٹر کا ٹارگٹ کلنگ گینگ فیصل آباد میں دوبارہ سرگرم

فیصل آباد(احمد یٰسین)پنجاب پولیس کے انسپکٹر کا ٹارگٹ کلنگ گینگ دوبارہ فیصل آباد میں سرگرم ہو گیا ہے۔ درجنوں افراد کی ٹارگٹ کلنگ میں ملوث اس گینگ کو وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ کی سرپرستی حاصل ہونے کی رپورٹس سامنے آچکی ہیں جبکہ اس گینگ کا سربراہ حاضر سروس پولیس انسپکٹر رانا فرخ وحید ہے جودوران سروس یہ گینگ چلاتا رہا اور اپنا راز فاش ہونے پر حکومتی افراد کی مدد سے بیرون ملک فرار ہو گیا تھا۔فیصل آباد میں اس گینگ کے دوبارہ سرگرم ہونے اور ٹارگٹ کلنگ کرنے کی اطلاعات سامنے آئی ہیں۔نیوزلائن کے مطابق پولیس انسپکٹر انا فرخ وحید کا ٹارگٹ کلنگ گینگ فصل آباد میں دوبارہ سرگرم ہونے کی اطلاعات سامنے آئی ہیں۔مذکورہ گینگ فیصل آباد میں دو درجن سے زائد افراد کی ٹارگٹ کلنگ کرنے میں ملوث ہے اور اس کا سربراہ رانا فرخ وحید شہر کے متعدد تھانوں میں بطور ایس ایچ او تعینات رہا ہے اور اعلیٰ پولیس افسران کا چہیتا انسپکٹر اور محکمے میں انتہائی اثرورسوخ رکھتا تھا۔رانا فرخ وحید اپنے دور میں وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ خاں کا بھی انتہائی چہیتا اور قابل اعتماد ساتھی رہا ہے۔ مسلم لیگ ن کے ایک اہم رہنما علی اصغر بھولا گجر اور ن لیگ کے ہی ایک کارکن شانی کی ٹارگٹ کلنگ کی تحقیقات کے دوران رانا فرخ وحید کا رازفاش ہو گیا۔ رانا فرخ کا قریبی ساتھی اور اہم ٹارگٹ کلر علی کمانڈو کو پولیس نے گرفتار کر لیا۔ اس وقت کے سی پی او فیصل آباد سہیل تاجک نے خودعلی کمانڈو سے تحقیقات کی نگرانی کی۔ پولیس ریکارڈ کے مطابق علی کمانڈو نے براہ راست صوبائی وزیر قانون رانا ثنا ء اللہ پر الزام عائد کیا کہ وہ رانا فرخ وحید کے گینگ کی سرپرستی کرتے ہیں۔تاہم بعد ازاں یہ معاملہ حکومتی اثرورسوخ کی وجہ سے دبا دیا گیا۔ اور ہنوز اس معاملے کی انکوائری ہونا باقی ہے۔ابھی تک یہ بھی فائنل نہیں ہو سکا کہ رانا ثناء اللہ اس معاملے میں ملوث ہیں یا انہیں پھنسانے کی کوشش کی گئی۔رانا فرخ وحید گینگ کے چار افراد پکڑے جا چکے ہیں جبکہ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ متعدد افراد غائب ہیں اوررانا فرخ سمیت کئی ایک بیرون ملک فرار ہو چکے ہیں۔ رانا فرخ وحید کے بیرون ملک فرار میں بھی حکومتی افراد کے ملوث ہونے کی اطلاعات سامنے آئیں مگر اس معاملے کی بھی انکوائری نہ ہوسکی۔سال 2016میں وزیر قانون رانا ثناء اللہ کے حلقے میں مسلم لیگ ن کا ایک سرگرم کارکن آصف بٹ قتل ہوا تو اس کے قتل کا الزام بھی اسی گینگ پر لگا ۔ دو روز قبل آصف بٹ قتل کیس کا مدعی اور مقتول کا بھائی عمران بٹ بھی ٹارگٹ کلنگ کی نذر ہو گیا۔مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما اور میاں شہباز شریف کے قریبی عزیزچوہدری شیر علی تو علی اعلان یہ الزام عائد کرتے رہے ہیں کہ رانا ثناء اللہ قتل کئی دو درجن وارداتوں میں ملوث اور رانا فرخ وحید گینگ کے سرپرست ہیں۔

Related posts