لاہورمیں مہنگائی تھم نہ سکی:سبزیاں پھر خرید سے باہر


لاہور(نیوزلائن)عام مارکیٹ اور اتوار بازاروں میں مہنگائی تھم نہ سکی،ٹماٹر پھر 100 روپے کلوہوگئے جبکہ دوسری سبزیاں بھی خرید سے باہر ہو گئیں۔تفصیلات کے مطابق موسمی سبزیاں بھی شہریوں کی خرید سے باہر ہو گئی ہیں، ماڈل بازاروں میں بھی عوام کو ریلیف نہیں مل سکا ،مولی، بند گوبھی بازار سے غائب ہیں ،گاجریں ،مونگرے ،مٹر ،شملہ مرچ بھی عوام کی پہنچ سے دور ہو گئے ہیں۔ اتوار بازاروں میں مٹر 90 روپے ،مونگرے 95روپے اور گوبھی 53 روپے فی کلو تک فروخت ہوتی رہی ۔شملہ مرچ100،پیاز 46اورآلو 33 روپے کلو فروخت ہوئے ۔دوسری طرف ٹماٹر کی قیمت میں بھی تیزی بدستور جاری ہے ،ایک ہفتے میں 22 روپے کلو اضافہ ہو گیا،اوپن مارکیٹ میں اس کی قیمت 100 روپے کلو ہو گئی۔چند روز سے مرغی کا گوشت بھی ہاتھ نہیں آرہا،گزشتہ روز اس کی اتوار بازاروں میں قیمت 234روپے کلوتھی۔ادھر اتوار بازاروں میں ناقص کوالٹی کی سبزیاں اور پھل فروخت کئے گئے جبکہ سہولیات کا بھی فقدان تھا۔ماڈل ٹاؤن اتوار بازار میں پریشان صارفین کو اپنا سامان باہر لے جانے کے لئے ٹوکرے والوں کو الگ پیسے دینے پڑے ۔اس موقع پر خریداری کیلئے آئیں خواتین نے کہا کہ مہنگائی کی وجہ سے کچن بجٹ میں ایک ہزار روپے کا اضافہ ہو گیا ،موسمی سبزیاں بھی مہنگی بک رہی ہیں ۔دوسرے خریداروں نے کہا کہ ماڈل بازاروں کو بنانے کا مقصد ختم ہو گیا ،ہر سٹال کے اپنے ریٹس ہیں ۔دوسری جانب انتظامیہ نے کہا کہ کوالٹی اور سہولیات کے فقدان کی ذمہ دار میٹروپولیٹن کارپوریشن ہے ۔تاہم چیئرمین ڈسٹرکٹ پرائس کنٹرول کمیٹی میاں عثمان نے اتوار بازاروں کے دورے میں انتظامات کو تسلی بخش قرار دیا ۔اے پی پی کے مطابق چیئرمین پرائس کنٹرول کمیٹی کی سربراہی میں ٹیم نے شادمان اتوار بازار کا دورہ کر کے سرکاری ریٹ لسٹ کے مطابق فروخت اور معیار کا جائزہ لیا ، گراں فروشی پر 6دکانداروں کے خلاف مقدمات کا اندراج کر ادیا گیا جبکہ2سٹالز سے ناقص اشیائے خورونوش کو فوری ہٹوا دیا گیا ۔

Related posts

Leave a Comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.