کالعدم تنظیموں کی نئی فہرست، فلاح انسایت فاؤنڈیشن بھی شامل


اسلام آباد(نیوزلائن)وفاقی وزارت داخلہ نے کالعدم قرار دی گئی تنظیموں کی نئی فہرست جاری کر دی ہے جس کے بعد کالعدم تنظیموں کی تعداد 72 ہو گئی۔ نئی فہرست میں جماعة الدعوة اور فلاح انسانیت فاﺅنڈیشن بھی شامل ہیں۔ حکومت نے تمام کمپنیوں کو اس بات کا پابند بنایا ہے کہ وہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی کالعدم تنظیموں کی فہرست میں شامل کسی تنظیم اور افراد کو عطیات نہ دیں۔ پابندی پر عملدرآمد نہ کرنے والوں کو بھاری جرمانہ کیا جائے گا۔ شہری کالعدم تنظیموں کی سرگرمیوں کی اطلاع 1717 پر دیں۔ سلامتی کونسل کی فہرست میں جماعة الدعوة کے علاوہ لشکر طیبہ، فلاحِ انسانیت فاﺅنڈیشن، پاسبانِ اہلحدیث اور پاسبانِ کشمیر بھی شامل ہیں۔ حکومت پاکستان پابندی پر عملدرآمد نہ کرنے والوں پر پہلے ہی ایک کروڑ روپے کا جرمانہ عائد کر چکی ہے۔ فہرست میں بلوچستان سے تعلق رکھنے والی سات کالعدم تنظیمیں بلوچستان لبریشن آرمی، بلوچستان نیشنل لبریشن آرمی، بلوچستان لبریشن یونٹ فرنٹ، بلوچستان ریپبلکن آرمی، لشکر بلوچستان، بلوچستان مسلح دفاع تنظیم اور بلوچستان یونٹ آرمی شامل ہیں۔ ذرائع کے مطابق بلوچستان میں کام کرنے والی یہ تنظیمیں مذہبی نہیں ہیں تاہم بلوچستان میں لشکر جھنگوی بھی کافی سرگرم ہے۔ گلگت بلتستان میں کام کرنے والی تنظیموں میں تنظیم نوجوانان اہلسنت، مسلم سٹوڈنٹس آرگنائزیشن، مرکز سبیل آرگنائزیشن، شیعہ طلبہ ایکشن کمیٹی شامل ہیں۔ صوبہ سندھ میں پیپلز امن کمیٹی کے علاوہ تحریک طالبان، لشکر جھنگوی اور دیگر ہم خیال تنظیمیں متحرک ہیں جبکہ اس کے علاوہ مختلف گروپ اغوا برائے تاوان کی وارداتوں میں ملوث ہیں جن میں جند ﷲ گروپ سرفہرست ہے۔ وزارت داخلہ کے ذرائع کے مطابق پنجاب میں لشکر جھنگوی، سنی تحریک، تحریک نفاذ شریعت محمدی، سپاہ صحابہ پاکستان اور لشکر طیبہ زیادہ متحرک ہیں۔

Related posts