شہباز شریف کی آشیرباد سے بیوروکریسی کی غیراعلانیہ ہڑتال

لاہور (احمد یٰسین)شہباز شریف حکومت کی آشیرباد سے پنجاب کی بیورو کریسی نے احد چیمہ کی گرفتاری کیخلاف غیراعلانیہ ہڑتال کردی ہے افسران دفاتر سے غائب ہیں اور کام کرنے کو تیار نہیں ہیں۔قانونی ماہرین اور سول سوسائٹی کے افرادقرار دے رہے ہیں کہ بیوروکرسی کو میاں شہباز شریف اپنے بچاؤ کیلئے استعمال کررہے ہیں۔نیوزلائن کے مطابق پنجاب بھر میں بیوروکریسی کام چھوڑ ہڑتال کردی ہے۔ افسران کی بہت بڑی تعداد اپنے دفاتر سے غائب ہے اور سرکاری امور سرانجام نہیں دے رہے۔ کرپشن اور اختیارات کا ناجائز استعمال کرنے کے الزام میں گرفتار احد چیمہ کے خلاف نیب کی کارروائی کو بطور جواز پیش کرتے ہوئے بیوروکریسی ہڑتال کرکے اپنی کرپشن کو تحفظ فراہم کرنا کا مطالبہ کررہے ہیں۔ذرائع کے مطابق پنجاب کی بیوروکریسی کو ہڑتال اور کام چھوڑنے پر آمادہ خود مسلم لیگ ن کی حکومت نے آمادہ کیا ہے۔ احد چیمہ کیخلاف کارروائی مستقبل میں میاں شہباز شریف کیلئے مشکل کا باعث بن سکتی ہے اور وہ خود ہی بیوروکریسی کو استعمال کرکے اپنے خلاف متوقع کارروائی رکوانے کی کوشش کر رہے ہیں۔بیوکریسی کی ہڑتال کی آڑ میں اصل مقاصد شہباز شریف حکومت کی کرپشن کو تحفظ دینا ہے۔ نیب سندھ میں بالخصوص اور ملک بھر میں بالعموم افسران کیخلاف کارروائی کررہی ہے۔ کراچی ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے ڈی جی کو بھی احد چیمہ کی طرح ہی ان کے دفتر سے اسی انداز میں گرفتار کیا گیا تھا اس وقت مسلم لیگ ن نے واہ واہ کے ڈونگرے برسائے تھے۔ سندھ میں بڑے پیمانے پر نیب نے کارروائیاں کیں ہیں اور درجنوں بیوروکریٹس کو گرفتار کیا ہے اس وقت بیوروکریسی کو عدم تحفظ اور زیادتی کا احساس کیوں نہیں ہوا۔ پنجاب میں بھی ای ڈی او فنانس فیصل آباد سمیت متعدد افراد کو نیب نے ان کے آفس سے گرفتار کیا مگر بیوروکریسی کو ایسا کچھ احساس نہ ہوا اب یکا یک احد چیمہ کی گرفتاری پر کیوں بیوروکریسی کو عدم تحفظ کا احساس ہو رہا ہے یہ ایک سوالیہ نشان بنا رہے گا۔

Related posts