ن لیگ نے بوگس ڈگریاں دینے والے کو سینیٹ میں پہنچا دیا


اسلام آباد(نیوزلائن)مسلم لیگ ن نے اقدار کی سیاست کے تمام دعوے پس پشت ڈال دئیے ہیں۔ بوگس ڈگریاں بیچنے والے کو پاکستان کے سب سے بڑے اور جمہوری ادارے سینیٹ میں پہنچا دیا۔ مسلم لیگ ن کی حمائت سے آزاد امیدوار کے طور پر پنجاب سے سینیٹر بننے والے حافظ عبدالکریم نے ڈیرہ غازی خاں میں ایک غیرقانونی تعلیمی ادارہ انڈس انسٹی ٹیوٹ بنا رکھا ہے۔ انڈس انسٹی ٹیوٹ کے لاہور کی ایک یونیورسٹی کیساتھ متنازعہ الحاق کا معاملہ سامنے آچکا ہے۔ بعد ازاں جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کیساتھ اس ادارے کا جعلی سازی اور ملی بھگت سے الحاق کروایا گیا۔ یہ الحاق غلط ثابت ہوا تو حافظ عبدالکریم کاانڈس انسٹی ٹیوٹ بغیر کسی جامعہ کیساتھ الحاق کے چلتا رہا۔ انڈس انسٹی ٹیوٹ طلبہ سے کروڑوں روپے فیس اور دیگر واجبات وصول کر چکا تھا اور ہزاروں طلبہ کو بوگس ڈگریاں بھی دی جاتی رہیں۔ حافظ عبدالکریم کے انڈس انسٹی ٹیوٹ کے طلبہ کو بوگس ڈگریاں دئیے جانے اور جعلی و غیرقانونی الحاق کا معاملہ کی انکوائری ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے پاس زیرالتوا ہے۔ اس معاملے کی ایک انکوائری جی سی یونیورسٹی فیصل آباد میں بھی ہو رہی ہے۔لاہور میں ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ میں بھی اس حوالے سے انکوائری زیرالتوا ہے۔اپنے ادارے کا یونیورسٹیوں کیساتھ جعلی الحاق کرنے اور طلبہ کو بوگس ڈگریاں دینے والے حافظ عبدالکریم کو مسلم لیگ ن نے پہلے قومی اسمبلی میں پہنچایا اور اب سینیٹ میں بھجوا دیا ہے۔

Related posts