ن لیگ کے قائد نوازشریف بھی جوتا کلب کے ممبر بن گئے


لاہور (نیوزلائن)لاہور میں مسلم لیگ ن کے قائد میاں نواز شریف پر دینی مدرسے کی تقریب کے دوران جوتا پھینک دیا گیا۔ جوتا نواز شریف کے کندھے اور چہرے پر لگا ۔ جوتا ایک باریش شخص نے پھینکا۔جوتا لگنے کیساتھ ہی ڈائس کے قریب موجود ایک دوسرے باریش شخص نے نعرے بازی بھی شروع کردی گئی۔ پولیس نے دونوں کو گرفتار کر لیا ہے۔نیوزلائن کے مطابق واقعہ لاہور کے ایک دینی مدرسے جامعہ نعیمیہ میں پیش آیا۔ نااہل ہونے والے سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف جامعہ نعیمیہ کی انتظامیہ کی دعوت پر وہاں ایک سیمینار میں شرکت کیلئے گئے تھے۔سیمینار سے خطاب کیلئے میاں نواز شریف کو بلایا گیا اور وہ ڈائس پر پہنچے ہی تھے کہ سامنے موجود ایک باریش شخص نے اپنا جوتا اتار کر ان پر پھینک دیا ۔ جوتا میاں نواز شریف کے بائیں کندھے اور چہرے پر لگا۔ میاں نواز شریف کو جاتے لگتے ہی ڈائس کے قریب موجود ایک دوسرے باریش شخص نے میاں نواز شریف کیخلاف نعرے بازی شروع کردی۔پولیس نے دونوں کو موقع پر ہی گرفتار کر لیا ہے۔جوتا باری کا شکار ہونے پر میاں نواز شریف سیمینار ادھورا چھوڑ کر چلے گئے۔جوتا پھینکنے والے شخص کا نام عبدالغفور اور وہ آزاد کشمیر کا رہائشی بتایا جاتا ہے۔ اس کی عمر بائیس سال اور وہ جامعہ نعیمیہ کا ہی طالب علم بتایا جاتا ہے۔ اس کے ساتھی کا نام ساجد اور وہ دیپالپور کا رہائشی بتایا جاتا ہے۔

Related posts