نواز شریف پر جوتا باری:توہین‘ افواہیں‘ دھمکیوں کا مقدمہ درج


لاہور(احمد یٰسین) سیاسی رہنماؤں پر جوتا باری کرنے کے حوالے سے پاکستان کا تعذیراتی قانون انتہائی مبہم نکلااور پاکستان پینل کوڈ کی دفعات مبہم ہونے پر نواز شریف پر جوتا باری کرنے والے کیخلاف قیام امن یقینی بنانے کی آرڈیننس کا سہارا لے کر ملزم کیخلاف مقدمہ مضبوط کرنا پڑا۔ ایف آئی آر میں تین ملزمان کو نامزد کیا گیا ہے ۔نیوزلائن کے مطابق لاہور میں سابق وزیراعظم میاں نواز شریف پر جوتا پھینکنے والے ملزم عبدالغفور اور اس کے دو ساتھیوں کیخلاف پولیس نے مقدمہ درج کر لیا ہے۔ ملزمان کیخلاف پاکستان پینل کوڈ کی دفعات 355 ‘ 506‘ اور 16ایم پی او ‘ کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔ قانون کو دیکھا جائے تو دفعہ 506پی پی سی دھمکیاں دینے کی ہے۔ میاں نواز شریف پر جوتا پھینکنے کے واقعہ میں دھمکیاں کیسے شامل کی گئی ہیں اس پر قانونی ماہرین حیران ہیں۔ 16ایم پی او افواہیں پھیلانے کی ہی۔ میاں نواز شریف پر جوتا باری کو افواہیں پھیلانے کیساتھ کیسے جوڑا جائے گا اس بارے بھی قانونی ماہرین کو رائے نہیں دے پا رہے۔ دفعہ 355کسی شخص کی توہین کرنا ہے ۔ اس کا اعتراف کرکے بھی میاں نواز شریف خود ہی پھنس جائیں گے۔ قانونی ماہرین کے مطابق اگر یہ کیس چلا تو اس میں میاں نواز شریف کا بیان انتہائی اہمیت کا حامل ہو گا۔ انہیں اپنی توہین کا اعتراف کرنا پڑے گا ایسا نہ کرنے پر مقدمہ زیرو ہو جائے گا۔ ملزمان کیخلاف مقدمہ پولیس کے مدعیت میں درج کیا گیاہے۔

Related posts