مریم اورنگزیب حکومت کی بجائے پارٹی ترجمان بن گئیں


اسلام آباد(نیوزلائن)وفاقی حکومت کی ترجمانی کیلئے مقرر کئی گئیں وزیر اطلاعات اپنی حکومت کی بجائے ایک سیاسی جماعت اور پارٹی کی ناہل لیڈر شپ کی ترجمانی کا فریضہ سرانجام دینے لگیں۔ مریم اورنگ زیب وزیر اطلاعات ہونے کے باوجودوفاقی حکومت کی ترجمانی اور حکومتی مؤقف میڈیا پرپیش کرنے کی بجائے مسلم لیگ ن کی ترجمانی کر رہی ہیں جبکہ مسلم لیگ ن کی سیکرٹری اطلاعات بھی نہیں ہیں اور پارٹی نے انہیں ترجمانی کی ذمہ داری بھی نہیں سونپی۔ نیوزلائن کے مطابق رکن قومی اسمبلی مریم اورنگ زیب کو وزیرمملکت اطلاعات بنا کر وفاقی حکومت نے اپنی ترجمانی کی ذمہ داری سونپ رکھی ہے۔اس کے ساتھ سرکاری و غیرسرکاری الیکٹرانک و پرنٹ میڈیا کی نگرانی اور سرکاری میڈیا کو چلانے کی ذمہ داری بھی وزیر اطلاعات کو سونپی گئی ہے۔ وفاقی حکومت کا ہر معاملے میں آفیشل مؤقف میڈیا کو پیش کرنا بھی مریم اورنگ زیب کی ذمہ داری ہے۔مگر میاں نواز شریف کی حکومت کے خاتمے کے بعد شاہد خاقان عباسی کے وزیر اعظم بننے کے بعد سے مریم اورنگ زیب اپنی اس ذمہ داری کو ادا نہیں کر رہیں۔ مریم اورنگ زیب وفاقی حکومت کی ترجمانی کرنے کی بجائے مسلم لیگ ن کی ترجمانی کا فریضہ ادا کرنے کیلئے سرگرم ہیں۔جبکہ وہ ملسم لیگ ن کی سیکرٹری اطلاعات بھی نہیں ہیں۔ مریم اورنگ زیب اپنے وزیر اعظم اور وفاقی حکومت کا دفاع کرنے اور ان کی ترجمان بننے کی بجائے میاں نواز شریف اور مریم نواز کی ترجمان بننے کی کوشش میں رہتی ہیں۔ جبکہ عہدے کے لحاظ سے وہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور وفاقی حکومت کی ترجمان ہیں۔ میاں نواز شریف یا مریم نواز نے انہیں اپنا ترجمان مقرر ہی نہیں کیا۔مریم نواز جو ذمہ داریاں نبھا رہی ہیں وہ انہیں سونپی ہی نہیں گئیں۔ مسلم لیگ ن کے سیکرٹری اطلاعات مشاہداللہ خان ہیں اور پارٹی یا پارٹی لیڈر شپ کا مؤقف میڈیا کے سامنے پیش کرنا ان کی ذمہ داری ہے۔ مریم اورنگ زیب وفاقی حکومت کی ترجمان ہیں مگر میڈیا میں وہ وفاقی حکومت کی بجائے مسلم لیگ ن کی ترجمان بن کر پیش ہوتی ہیں۔پارٹی میں بھی وہ صرف میاں نواز شریف اور مریم نواز کی ترجمانی کرتی پائی جاتی ہیں جبکہ مسلم لیگ ن کے صدر میاں شہباز شریف ‘ چیئرمین راجہ ظفرالحق اور دیگر مرکزی عہدیداروں کی بابت بات کرنے سے گریزاں رہتی ہیں۔

Related posts