انسٹالمنٹ کارپوریشن کی آڑ میں سود کا کاروبارکھلے عام جاری


فیصل آباد(نیوزلائن)فیصل آباد میں اشیاء ضروریہ کی انسٹالمنٹ کے کاروبار کی آڑ میں بڑے پیمانے پر سود کا دھندا کیا جا رہا ہے۔ضلعی انتظامیہ اور پولیس سود کا مکروہ دھندہ انسٹالمنٹ کی آڑ میں کرنے والے گھناؤنے چہروں سے آگاہ ہے مگر ان کیخلاف ایکشن لینے اور قانون کے شکنجے میں جکڑنے کی بجائے انہیں ’’پروٹوکول‘‘ دینے میں مصروف رہتی ہے۔نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد میں کھلے عام سود کا مکروہ دھندہ کیا جارہا ہے۔ شہریوں کو سود در سود کے سسٹم میں جکڑا جا رہا ہے ۔ بڑی تعداد میں انسٹالمنٹ کا کاروبار کرنے والے سود کا جال بن کر شہریوں کو اس میں جکڑنے کیلئے سرگرم رہتے ہیں۔سود کے اس مکروہ دھندے میں شہر کے 80فیصد انسٹالمنٹ مالکان براہ راست ملوث ہیں ۔ لوگوں کو ڈائریکٹ پیسے دئیے جاتے ہیں اس پر سود لیا جاتا ہے اور ادائیگی نہ کرسکنے والوں کو سود در سود کے سلسلے میں جکڑا جارہا ہے۔ ذرائع کے مطابق سود خور مافیا نے اقساط کی ادائیگی میں تاخیرپر اپنا اثرورسوخ استعمال کرکے شہریوں کیخلاف درجنوں جھوٹے مقدمات درج کروا رکھے ہیں۔سود خور مافیا نے اپنے پنجے فیصل آباد چیمبر آف کامرس میں بھی گاڑ رکھے ہیں جبکہ آپس میں گٹھ جوڑ کیلئے ایسوسی ایشن اور یونین بنا کر سرکاری اداروں سے تحفظ حاصل کررہے ہیں۔سود کے کاروبار بارے قانون سازی ہونے کے باوجود سودخور مافیا فیصل آباد میں کھلے عام یہ دھندہ چلا رہا ہے اور ضلعی انتظامیہ ‘ پولیس و دیگر ادارے مجرمانہ خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔

Related posts