اشرافیہ‘ بیوروکریسی کا تفریحی مرکز’’ چناب کلب‘‘ٹیکس چوری میں ملوث


فیصل آباد(نیوزلائن)فیصل آباد کی اشرافیہ اور بیوروکریسی کا تفریحی مرکز چناب کلب ٹیکس چوری میں ملوث نکلا۔ڈپٹی کمشنر فیصل آباد کی سربراہی میں چلنے والے چناب کلب نے ایف بی آر کو لاکھوں روپے کی ٹیکس ادائیگی نہیں کی جو گوشواروں کی چیکنگ میں پکڑی گئی۔نیوزلائن کے مطابق ایف بی آر کی ایک رپورٹ میں سامنے آیا ہے کہ چناب کلب فیصل آباد لاکھوں روپے کی ٹیکس چوری میں ملوث پایا گیا ہے۔ ایف بی آرکی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ چناب کلب نے سال 2011اور سال 2012میں ٹیکس ادائیگی کم کی تھی۔ ایف بی آر حکام نے اس کے گوشواروں کا جائزہ لیا اور تفصیلی آڈٹ کیا تو سامنے آیا کہ چناب کلب نے سال 2011میں 10لاکھ 99ہزار 631روپے کی ٹیکس چوری کی ۔ آڈٹ 21اپریل 2017کو مکمل ہوا اور 15اگست کو چناب کلب کو نوٹس جاری کیا گیا مگر کلب انتظامیہ نے چوری پکڑے جانے کے باوجود ٹیکس دینے کی بجائے تاخیری حربے استعمال کرنا شروع کردئیے۔ اسی طرح کلب کی سال 2012کی ٹیکس چوری بھی پکڑی گئی اس سال چناب کلب لمیٹڈ نے 18لاکھ89ہزار 474روپے کی ٹیکس چوری کی ۔ یہ بھی تفصیلی آڈٹ میں پکڑی گئی۔آڈٹ 28اگست 2017کو مکمل ہوا اور 10نومبر کو چناب کلب کی انتظامیہ کوٹیکس ادائیگی کا نوٹس جاری کر دیاگیا۔ دونوں سال کا 29لاکھ 89ہزار 105روپے کا ٹیکس چناب کلب نے دو سالوں میں چوری کیا۔آڈٹ میں پکڑا گیا اور ادائیگی کے نوٹس ملے تو سرکار کے خزانے کا تحفظ کرنے کے ذمہ دار ڈپٹی کمشنر کی سربراہی میں چلنے والے ایلیٹ کلاس کے تفریحی مرکز چناب کلب نے اپنے سیکرٹری اور دیگر حکام کی منظوری سے ٹیکس ادائیگی میں تاخیری حربے استعمال کرنا شروع کردئیے۔ پہلے کمشنر ان لینڈ ریونیو سے حکم امتناعی لیا گیا اور پھر عدالت عالیہ میں رٹ پٹیشن دائر کرکے حکم امتناعی لے لیا۔ تاہم قواعد کی رو سے حکم امتناعی لینے کیلئے لازمی قرار دیا گیا 25فیصد ٹیکس ادائیگی بھی جمع نہیں کروائی گئی۔

Related posts