شہباز شریف کے’’ انتہائی چہیتے ‘‘افسر نورالامین مینگل پنجاب بدر


فیصل آباد(نیوزلائن)پنجاب حکومت نے سابق ڈائریکٹر جنرل پنجاب فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل کو صوبہ بدر کردیا ہے۔ انہیں فوری پنجاب حکومت نے ریلیز کردیا اور ہنگامی بنیادوں پر بلوچستان رپورٹ کرنے کا حکم دیا گیا۔نورالامین مینگل کیخلاف متعدد معاملات میں ہیراپھیری پر نیب اور انٹی کرپشن میں تحقیقات بھی ہورہی ہیں۔ نیوزلائن کے مطابق پنجاب حکومت نے سابق ڈپٹی کمشنر فیصل آباد نورالامین مینگل کو بلوچستان بھجوا دیا ہے۔ نورالامین مینگل بلوچستان بھجوائے جانے سے قبل ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی کے طور پر خدمات سرانجام دے رہے تھے۔ مینگل کا شمار سابق وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کے انتہائی چہیتے افسران میں ہوتا تھا۔ انہیں آؤٹ آف ٹرن پرموشن اور شولڈر پرموشن دے کر میاں شہباز شریف نے اہم پوسٹوں پر تعینات رکھا۔ ان کی پنجاب فوڈ اتھارٹی میں تعیناتی بھی مشکوک سمجھی جاتی تھی اور اس حوالے سے بہت سے تحفظات سامنے آتے رہے ہیں۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی میں تعیناتی کے دوران نورالامین مینگل کے قواعد کو نظر انداز کرنے اور قوانین پامال کرکے خودساختہ عدالت لگانے‘ قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اقدامات کرنے کی رپورٹس بھی سامنے آتی رہیں۔ نورالامین مینگل کی ڈپٹی کمشنر و ڈی سی او فیصل آباد تعیناتی کے دوران بھی ان کے متعدد سکینڈل سامنے آئے۔ مینگل کے فیصل آباد سے ’’نوٹوں‘‘ کی گاڑی بلوچستان بھجوانے کی بھی ایک رپورٹ سامنے آئی جس پر تحقیقات ہوئیں مگر بعد ازاں معاملہ ٹھپ کردیا گیا۔ نورالامین مینگل کے اپنے ایک گن مین کے ذریعے ’’مال پانی‘‘ بنانے اور بعد ازاں اس گن مین کے اچانک غائب ہوجانے کی بھی رپورٹ سامنے آئی مگر اس پر بھی انکوائری رانا ثناء اللہ اور بعض دیگر ن لیگی رہنماؤں کی مداخلت کی وجہ سے آگے نہ بڑھ سکی۔فیصل آباد کی بزنس کمیونٹی نے میاں شہباز شریف کو یہ بھی شکائت کی کہ نورالامین مینگل بزنس کمیونٹی سے ’’بھتہ خوری‘‘ کرتے ہیں اور بھتہ نہ دینے والے تاجروں کو تنگ کرتے ہیں۔ میاں شہباز شریف نے اس اہم معاملے کی انکوائری پر نورالامین مینگل کے ساتھ اتنی شفقت فرمائی کی اس درخواست پر انکوائری خود نورالامین مینگل کو ہی کرنے کا حکم دیدیا۔ اس انکوائری کا وہی حشر ہوا جو اپنے خلاف انکوائری کرنے کا موقع خود ہی کرنے کو کسی کو موقع دیا جائے تو ہوتاہے۔ نورالامین مینگل پر فیصل آباد میں بلدیاتی انتخابات کے دوران رانا ثناء اللہ گروپ کو کھلی سپورٹ کرنے کا بھی الزام لگایا گیا۔ سابق میئر فیصل آباد چوہدری شیر علی کے بیٹے کو دھاندلی سے ان کی اپنی یونین کونسل میں ہرانے میں بھی نورالامین مینگل کا نام آتا رہا۔ چوہدری شیر علی کھلے عام بلدیاتی انتخابات میں دھاندلی کا شور مچاتے رہے مگر میاں شہباز شریف کی پشت پناہی کی وجہ سے دھاندلی کے ذمہ دار گردانے جانیوالے نورالامین مینگل و دیگر کیخلاف کوئی ایکشن نہ ہوسکا۔عام انتخابات سے قبل تبادلوں کی زد میں اب نورالامین مینگل بھی آگئے ہیں۔ پنجاب حکومت نے ان کو صوبے میں ہی کہیں ادھر ادھر کرنے کی بجائے صوبہ بدر کردیا ہے۔ ٹرانسفر کا حکم نامہ جاری کرتے ہی انہیں فوری پنجاب سے ریلیز کیا گیا اور ہنگامی حکم نامے کے ذریعے بلوچستان رپورٹ کرنے کی ہدائت کی گئی۔

Related posts