پاکستانی اداکارہ بچپن میں جنسی زیادتی کا نشانہ بنتی رہی


saraی وی شو بگ برادرسے شہرت پانے والی مشہور پاکستانی نژاد برطانوی اداکارہ سائرہ خان اپنے بچپن کا ایک دردناک واقعہ سناتے ہوئے لائیوٹی وی نشریات کے دوران پھوٹ پھوٹ کر رودیں۔ اخبار ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق سائرہ خان مقبول ٹی وی شو ”لوز ویمن“ میں شریک تھیں۔ وہ گینگ ریپ کا نشانہ بننے والی پاکستانی خاتون مختاراں مائی کے بارے میں بات کررہی تھیں کہ جذباتی ہو گئیں اور بچپن میں اپنے ساتھ ہونے والی جنسی زیادتی کا تذکرہ کرنے لگیں۔ وہ کہہ رہی تھیں ”اس خاتون (مختاراں مائی) نے مجھے حوصلہ دیا ہے۔ میں سب خواتین کو بتانا چاہتی ہوں کہ میرے ساتھ جو 13 سال کی عمر میں ہوا، جب میرے اپنے خاندان کا ایک شخص اندر آیا اور میرے ساتھ یہ سب کیا۔۔۔ “ اس کے بعد وہ مزید بات جاری نہ رکھ سکیں اور سسکیاں بھرنے لگیں۔ ان کی جذباتی کیفیت دیکھ کر شو میں شریک دیگر خواتین ان کے گرد جمع ہوگئیں اور انہیں حوصلہ دیتی رہیں، مگر سائرہ خان کی حالت سنبھل نہ سکی اور انہیں شو میں سے اُٹھ کر جانا پڑا۔ بعد ازاں وہ واپس آئیں اور اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا ”کسی بھی کلچر یا مذہب میں یہ قابل قبول نہیں ہے۔یہ غلط ہے۔ یہ ہر روز ہورہا ہے۔ اس عورت نے مجھے بولنے کا حوصلہ دیا ہے، ورنہ میں یہ سب کچھ کہنے کاحوصلہ نہیں رکھتی تھی۔ اس باہمت خاتون نے مجھے حوصلہ دیا کہ میں وہ سب کچھ کہہ سکوں جسے میں آج تک چھپاتی رہی۔
اس موقع پر شو کی میزبان لنڈا کا کہنا تھا کہ سائرہ خان نے اپنے ساتھ ہونے والے ظلم کو بیان کرکے جنسی زیادتی کا نشانہ بننے والی خواتین کو اپنی آواز بلند کرنے کا حوصلہ دیا ہے

Related posts