برآمدات کیلئے نئی تجارتی پالیسی ناگزیرہوچکی‘ رانااخلاق


فیصل آباد(نیوزلائن)سابق چیئر مین آل پاکستان پا ور لومز ایسوسی ایشن رانااخلاق احمدنے کہا ہے کہ نئی قائم ہونے والی حکومت ملک کو اقتصادی تباہی سے بچانے کیلئے قابل عمل منصوبوں پر عملدرآمد کروائے ۔پاکستان کو اس وقت فوری بیل آؤٹ پیکیج اور اس کے بعد ایک نئی سٹرٹیجک تجارتی پالیسی کی ضرورت ہے جو برآمدات کو جارحانہ انداز میں بڑھائے۔ ایسی پالیسی تمام شراکت داروں کی بھر پور مشاورت سے بنائے جائے تاکہ ملکی معیشت کو پائیدار بنیادوں پر استوار کیا جاسکے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے صنعتکاروں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ نئی حکومت ڈالر کی بڑھتی ہوئی قیمت کو کنٹرول کرے اور روپے کی قدر میں اضافہ کیلئے فوری اقدامات اٹھائے تاکہ ملکی معیشت مستحکم ہوں۔انہوں نے کہا کہ 2018کا جاری حسابات کا خسارہ اٹھارہ ارب ڈالر تک پہنچ چکا ہے جو دو سال قبل صرف4.87ارب ڈالر تھا جس نے ملک کا مستقبل داؤں پر لگادیا ہے گزشتہ دو سال کے دوران پالیسی ساز درآمدات میں کمی لانے میں ناکام رہے جس سے 2018میں اس کا حجم66 ارب ڈالر سے بڑھ گیا برآمدات کی بہتات نے مرکزی بینک کے زرمبادلہ کے ذخائر کو نو ارب ڈالر سے نیچے دھکیل دیا ہے جس کے باعث حکومت قرضوں میں مزید اضافہ ہوگا اسے کنٹرول کرنے کے لیے فوری اقدامات بروئے کار لائے جائیں۔

Related posts