تاجروں کی ملک گیر ہڑتال حکمرانوں کیخلاف ریفرنڈم ہے: سراج الحق

فیصل آباد (نیوز لائن) جماعت اسلامی کے امیرسینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ چترال سے کراچی تک تاجر برادری کی ملک گیر کامیاب ہڑتال حکومت کے خلاف ریفرنڈم ہے۔وزیر اعظم نے پورے پاکستان کو بند کرنے کاوعدہ پورا کردیا، حکومت کا فرض ہے کہ وہ عوام کی آواز سنے اور تاجروں کے جائز مطالبات پورے کرے،قوم کی قسمت کے فیصلے آئی ایم ایف کے دفاتر میں ہو رہے ہیں،حکومت تماشائی کا کردار اداکررہی ہے،موجودہ حکومت پاکستان کی تاریخ کی نااہل ترین حکومت ہے،عدلیہ کو عوام کا اعتماد بحال کرنے اور اپنا وقار بلند کرنے کیلئے ارشد ملک پر لگنے والے الزامات اور ویڈیوز کی انکوائری کیلئے جلد ازجلد ایک جوڈیشل کمیشن بنانا ہوگاتاکہ عوام کے اندر پائی جانے والی بے چینی اور بے یقینی کی صورتحال کو ختم کیا جاسکے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے المرکز الاسلامی فیصل آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر صوبائی امیر جاوید قصوری،نائب امیرسردارظفرحسین خان،ضلعی امیرانجینئر عظیم رندھاوا بھی موجود تھے۔۔انہوں نے کہا کہ دوچار لوگوں کا گرفتار کرنے کانام احتساب نہیں،پانامہ کیس میں دیگر436افراد کا نام بھی شامل ہے جن ابھی تک کچھ نہیں کیا گیا، حکومت احتساب کامحض ڈھنڈورا پیٹ رہی ہے،حقیقی احتساب ہوا تو حکومت کے وزیر مشیر سب اس کی زد میں آئیں گے اور اسمبلیوں میں صرف چند لوگ ہی بچیں گے۔انہوں نے کہا کہ نیب متنازعہ ہوچکا ہے،نیب اتنا پیسہ بھی جمع نہیں کررہا جتنا اس پر خرچ ہورہا ہے۔خود نیب کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ اگر صحیح احتساب ہوگیا تو حکومت کا وجود نہیں رہے گا۔وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر سے چیئرمین نیب کی تقرری کے اختیارات واپس لے کر چیف جسٹس سپریم کورٹ اور چاروں ہائی کورٹس اور اسلام آباد ہائی کورٹ کے ججز پر مشتمل پینل بنایا جائے جو چیئرمین نیب کا تقرر کریں۔انہوں نے کہا کہ سابقہ اور موجودہ حکمرانوں کی داخلہ وخارجہ پالیسیاں ایک ہیں،سابقہ و موجودہ حکومت کی معاشی پالیسی ایک ہے، آئی ایم ایف کی غلامی،مہنگائی،بے روز گاری کی اصل ذمہ دار یہی جماعتیں ہیں۔تینوں جماعتوں نے پرویز مشرف کی پالیسیوں کا نہ صرف دفاع کیا بلکہ ان کو آگے بڑھانے میں بھی ایک دوسرے سے آگے نکلنے کی کوشش کرتی رہیں۔پی ٹی آئی سیاسی مسافرخانہ ہے،آج پی ٹی آئی کابینہ میں وہی وزیر مشیر ہیں جو پرویز مشرف کی کابینہ میں تھے۔انہوں کہا کہ حکومت اور اپوزیشن کا ایجنڈا عوام کے مسائل نہیں،ذاتی مفادات ہیں،عوام مہنگائی،بے روز گاری اور آئی ایم ایف کی غلامی سے نجات چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت کو چلنے دیا جائے۔جماعت اسلامی عوام کو ریلیف دینے اور ملک و قوم کی بہتر خدمت کی اہلیت رکھتی ہے۔جماعت اسلامی ہی ملک کو کرپشن سے پاک کرسکتی ہے کیونکہ اس کے اپنے کسی فرد پر کرپشن کا کوئی داغ نہیں۔۔انہوں نے کہا کہ ہم حکومت اور اپوزیشن کے نہیں اللہ اور غریب عوام کے ساتھ ہیں،موجودہ حکومت پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ کا مجموعہ ہے،یہ ایک ہی اصطبل کے گھوڑے ہیں۔موجودہ حکمران بھی ملک و قوم کے ساتھ وہی کھیل کھیل رہے ہیں جو سابقہ حکومتوں نے کھیلا،کل کے حکمران بھی کشمیریوں کا ساتھ دینے کی بجائے بھارت سے دوستی نبھاتے تھے اور آج کے حکمران بھی اسی طرح کشمیریوں کے ساتھ بے وفائی کررہے ہیں،سابقہ حکمرانوں نے عوام کے ہاتھوں میں قرضوں کی ہتھکڑیا ں پہنائیں اور آج کے حکمران بھی آئی ایم ایف کی ڈکٹیشن پر سارے فیصلے کررہے ہیں۔حکومت آئی ایم ایف کے سامنے اتنی بے بس ہے کہ اپنے وزیرخزانہ اور اسٹیٹ بنک کے گورنر کو ہٹا کر ان عہدوں پر آئی ایم ایف کے کارندوں کو بٹھا دیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام کرپٹ اور چور نہیں بلکہ ایوانوں پر قابض مافیا کرپٹ اور چور ہے،عوام ٹیکس دینا چاہتے ہیں مگر حکومت ٹیکس نہیں جگا ٹیکس اور بھتہ دینے پر مجبور کررہی ہے جسے عوام کسی صورت قبول نہیں کریں گے۔انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کی نیت ٹھیک ہوتی تو وہ آئی ایم ایف کے سامنے جھکنے کی بجائے عوام کو ریلیف دیتے۔انہوں نے کہاکہ حکومت تاجروں کی کامیاب ہڑتال پر سٹپٹا گئی ہے اور کہتی ہے کہ اس ہڑتال کے پیچھے سیاسی جماعتیں ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہڑتال سیاسی جماعتوں نے نہیں، تاجروں نے کی ہے اور اس ہڑتال میں وہ تاجر بھی پیش پیش تھے جنہوں نے بڑی امیدوں کے ساتھ تبدیلی کے لیے ووٹ دیے تھے۔

Related posts