زرعی یونیورسٹی انتظامیہ نے مذہبی طلبہ تنظیم کا پروگرام ’’اپنا‘‘لیا


فیصل آباد (نیوز لائن) زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کی انتظامیہ نے مذہبی رجحان رکھنے والی ایک طلبہ تنظیم کے ویلنٹائن ڈے کے حوالے سے پروگرام کو’’ اپنا ‘‘لیا ہے اورمذہبی جماعت کے پروگرام کو یونیورسٹی کے پلیٹ فارم سے سرکاری پروٹوکول کے ساتھ منانے کا اعلان کردیا ہے۔ یونیورسٹی انتظامیہ مذہبی جماعت کے پروگرام اور نظرئیے کی باقاعدہ تشہیر کررہی ہے اور ویلنٹائن ڈے کو ’’سسٹر ڈے ‘‘ کے طور پر منانے کے باقاعدہ اعلانات کئے جارہے ہیں۔ نیوزلائن کے مطابق ملک کی بڑی مذہبی سیاسی پارٹی ’’جماعت اسلامی ‘‘ کی ذیلی طلبہ تنظیم ’’اسلامی جمعیت طلبہ ‘‘گزشتہ کئی سالوں سے 14فروری ’’ویلنٹائن ڈے ‘‘ کو ’’سسٹرڈے‘‘ کے طور پر منا رہی ہے اور اس حوالے سے جمعیت کے پلیٹ فارم سے جامعات اور کالجز میں تقاریب بھی کی جاتی رہی ہیں۔ اس سال بھی جمعیت اسی عزم اور اسلامی نظرئیے کیساتھ ویلنٹائن ڈے کو اپنے مخصوص انداز میں منانے کا ارادہ رکھتی ہے، جمعیت اور جماعت اسلامی کی طرف سے ملک بھر میں اس حوالے سے تقاریب اور اقدامات کے انتظامات بھی کئے جارہے ہیں۔ نیوز لائن کے مطابق مذہبی طلبہ تنظیم ’’اسلامی جمعیت طلبہ ‘‘ کے ’’سسٹرڈے‘‘ پروگرام کو زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے وائس چانسلر ڈاکٹر ظفر اقبال رندھاوا نے بھی ’’اپنا ‘‘ لیا ہے۔ ڈاکٹر ظفر اقبال رندھاوا گزشتہ کئی ہفتے سے ویلنٹائن ڈے کو ’’سسٹرڈے‘‘ کے طور پرمنانے اور اس موقع پر اسی تناظر میں تقریب کا اہتمام کرنے کے اعلانات کرتے پائے جارہے ہیں۔ زرعی یونیورسٹی جیسے بڑے ادارے کے سربراہ کی طرف سے ’’سسٹرڈے‘‘ منانے کے اعلانات نے اقتدار کے ایوانوں ‘ تدریسی و تحقیقی حلقوں کو ورطہ حیرت میں ڈال رکھا ہے۔ ماہرین مذہبی جماعت اور اس کی ذیلی طلبہ تنظیم کی طرف سے ’’سسٹر ڈے‘‘ منانے‘ ویلنٹائن ڈے کی مخالفت کرنے اور معاملات کو مخصوص اینگل میں پیش کرنے کو تو کسی حد تک درست قرار دیتے ہیں مگر جامعہ زرعیہ جیسے بڑے ادارے کے سب سے بڑے منصب دار کی طرف سے مذہبی تنظیم کو پروگرام کو اپنانے اور اسے سرکاری سطح پر منانے کے اعلانات کو یونیورسٹی قوانین اور سروس رولز کی کھلی خلاف ورزی قرار دے رہے ہیں۔

Related posts