سرکاری ہسپتالوں کے ایم ایس مریضوں کو زکوٰة فنڈز کی فراہمی میں رکاوٹ

فیصل آباد (نیوز لائن) فیصل آباد کے تین سرکاری ہسپتالوں کے ایم ایس مستحق مریضوں کو زکوٰة فنڈز کی فراہمی میں رکاوٹ بن گئے۔سات ماہ قبل بھجوائے گئے زکوٰة فنڈز کے کیس مسلسل یاددہانیوں کے باوجود محکمہ زکوٰة کو واپس نہ بھجوائے جا سکے۔ ڈپٹی کمشنر فیصل آباد اور سی ای او ہیلتھ مسلسل چھے ماہ سے غفلت برتنے والے تینوں ایم ایس حضرات کیخلاف ایکشن لینے سے گریزاں ہیں۔ نیوز لائن کے مطابق محکمہ زکوٰة نے فیصل آباد کے تین سرکاری ہسپتالوں جنرل ہسپتال غلام محمد آباد’جنرل ہسپتال سمن آباد اور تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال تاندلیانوالہ کے ایم ایس حضرات نے زکوٰة فنڈز کے کیسز سات ماہ گزرنے کے باوجود محکمہ زکوة فیصل آباد کو نہیں بھجوائے گئے ۔ جس کی وجہ سے ان ہسپتالوں میں آنیوالے مستحق مریضوں کے علاج معالجہ اور مفت ادویات کی فراہمی کیلئے زکوٰة فنڈز جاری نہیں ہوسکے۔ذرائع کے مطابق محکمہ زکوٰة فیصل آباد نے ان ہسپتالوں کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹس کو کیسز بھجوانے کیلئے نومبر2018میں مراسلہ بھجوایا تھا۔ اس کے بعد درجن بھر یاددہانی کے نوٹس بھی بھیجے جا چکے مگر تینوں ہسپتالوں کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹس نیمجرمانہ غفلت ولاپرواہی کا مظاہرہ کرتے ہوئے محکمہ زکوة آفس کیسز نہیں بھجوائے ۔ ذراء کے مطابق محکمہ زکوٰة کے پاس فنڈز موجود ہونے کے باوجود ایم ایس حضرات کی غفلت کے باعث مریضوں کو زکوٰة فنڈ سے امداد نہیں مل پا رہی۔ کیس بھجوانے والے تین سرکاری ہسپتالوں تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال جڑانوالہ’ٹی ایچ کیو ہسپتال سمندری اور ٹی ایچ کیو ہسپتال چک جھمرہ کو مستحق مریضوں کے علاج معالجہ ومفت ادویات کی فراہمی کیلئے محکمہ زکوٰة نے فنڈز جاری کردئیے ہیں جبکہ جنرل ہسپتال غلام محمد آباد’جنرل ہسپتال سمن آباد اور تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال تاندلیانوالہ کے ایم ایس حضرات کی غفلت و لاپرواہی کا خمیازہ غریب مریضوں کو بھگتنا پڑے گا۔

Related posts