سنٹرل جیل فیصل آباد کے 18 قیدیوں میں ایڈز کا انکشاف


فیصل آباد(نیوزلائن)سنٹرل جیل فیصل آبادکے 18 اسیرایڈزجیسے موذی مرض میں مبتلانکلے ۔اس امرکاانکشاف گزشتہ دنوں عمل میں لائی گئی ’’ سکریننگ ‘‘کے دوران ہوا۔ایڈزمیں مبتلاپائے جانے والوں میں قتل،ڈکیتی اورمنشیات کے مقدمات میں پچیس برس تک کے لئے پابندسلاسل کرائے جانے والے 15 قیدی اورحوالاتی کی حیثیت سے جیل میں رکھے گئے 3 ایسے ملزمان شامل ہیں کہ جن کے مقدمات عدالتوں میں زیرسماعت ہیں۔یہ امرقابل ذکرہے کہ دیگرقیدیوں کے ساتھ شب وروزگزارنے والے متاثرہ اسیران کوکسی خاص بارک میں منتقل کرنے اوران کاعلاج معالجہ کے خاطرخواہ انتظامات نہیں کئے جاسکے جس بناپران میں سے بعض متاثریں بھی اپنے ایڈززدہ ہونے سے بے خبرہیں۔ذرائع کے مطابق’’سکریننگ‘‘کے دوران ایڈزمیں مبتلاپائے جانیوالے کئی اسیران کے ’’الائزہ ٹیسٹ‘‘ بھی پازیٹوآچکے ہیں، اس بارے میں جیل انتظامیہ کاکہناہے کہ ’’سکریننگ‘‘کرنے والی ٹیم اس مقصدکے لئے خون کے نمونے ساتھ لے گئی تھی جس کے بعدسے اب تک کسی اسیرکے الائزہ ٹیسٹ کی رپورٹ موصول نہیں ہوئی، جیسے ہی ایسی کوئی اطلاع موصول ہوئی ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرز سول ہسپتال کے ڈاکٹروں کی مددسے متاثرین کافوری علاج شروع کردیاجائے گا۔بیان کیاجاتاہے کہ متاثرہ اسیران کی عمریں25 سے 55 سال کے درمیان ہیں،ان میں سے بیشترکی ظاہری حالت ٹھیک لگتی ۔ایک سوال کے جواب میں جیل افسرکاکہناتھاکہ مذکورہ اسیران جیل منتقلی سے قبل ہی مرض کاشکارتھے بازپرس کے دوران دوتین کے علاوہ کسی نے بھی اپنے ایڈززدہ ہونے کی اطلاع نہ دی،اندرون جیل اب بھی سکریننگ نہ ہوتی توشائد آنے والے کئی ماہ وسال بھی دیگراسیران کے ایڈزسے متاثرہ ہونے کی خبرنہ ہوپاتی ۔جیل افسرکے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان کی جاری کردہ ہدایات کے پیش نظرمہلک امراض کی آخری حد کوپہنچنے والے کئی اسیران کی رہائی کے لئے ضروری کوائف قبل ازیں حکام کوارسال کئے جاچکے ہیں۔ان اسیران کے الائزہ ٹیسٹ پازیٹوہونے یامرض شدت اختیارکرنے کی صورت میں علاج معالجہ کے لئے انہیں بھی جیلوں سے باہرمنتقل کیاجاسکتاہے۔ ’’سکریننگ ‘‘کے دوران جن اسیران کے ایڈزمیں مبتلاہونے کی نشاندھی کی گئی ان کے نام شبیر شاہ ولد عابدشاہ،وقاص ولد اقبال ،پٹھانے خان ولد اشرف ،عمران ولدافتخار،ندیم ولدرحمت،تنویرولد رحمت،عدنان ولد اسلم،سہیل ولد نصیر،فیاض ولد یعقوب ،اشرف ولد مالک،عامرولد عباس،عثمان ولد ممتاز،آصف ولد اشرف،لیاقت ولد شوکت ،وقاص ولدعبدالرزاق،سوناولد عارف اوراسماعیل ولدافضل بیان کئے جاتے ہیں۔

Related posts