شمس الاسلام ناز میڈیا ایکسی لینس ایوارڈزجیتنے والوں کا اعلان

فیصل آباد (نیوز لائن) پہلے شمس الاسلام ناز میڈیا ایکسی لینس ایوارڈز جیتنے والوں کا اعلان کردیا گیا ہے۔ ایوارڈز کا اعلان کا ایک خصوصی تقریب میں کیا گیا۔ تقریب کے مہمان خصوصی ڈکٹیٹر ضیاء الحق دور میں آزادی صحافت کی جدوجہد کرتے ہوئے کوڑوں کی سزا پانے والے صحافی ناصر زیدی اور مہمان اعزاز کمشنر فیصل آباد محمود جاوید بھٹی تھے۔تقریب میں نیشنل پریس کلب اسلام آباد کے سابق صدر شکیل انجم اور سینئر صحافی قربان ستی اور عامر بٹ نے خصوصی طور پر اسلام آباد سے جبکہ ڈپٹی ڈائریکٹر انفارمیشن سبحان علی’ اور مقامی صحافیوں کی بڑی تعداد نے تقریب میں شرکت کی۔ شمس الاسلام ناز میڈیا ایکسی لینس ایوارڈکمیٹی کے اعلان کے مطابق پرنٹ میڈیا رپورٹس میں قدیر سکندر کی روزنامہ جنگ کیلئے لکھی گئی رپورٹ کو بہترین قرار دیا گیا۔ دوسرے نمبر پر روزنامہ دنیا کے صغیر سانول رہے ۔ تیسری پوزیشن مشترکہ طور پر روزنامہ خبریں کے عاطف چوہدری اور روزنامہ امن کے شہباز علی ہادی نے حاصل کی ۔ الیکٹرانک میڈیا رپورٹس میں آصف سدھو کی سٹی 41پر چلنے والی رپورٹ پہلے’ ثنا رؤف کی اب تک نیوز کیلئے رپورٹ دوسرے اور مشترکہ طور پر نسیم شاہ (بزنس پلس) اور سکھر کی نوجوان صحافی سحرش کھوکھر (اے آر وائی ) کی رپورٹ تیسرے نمبر پر رہی۔ ڈیجیٹل میڈیا میں مردان کے عبدالرؤف یوسفزئی کی رائیڈے ٹائمز کے ڈیجیٹل ایڈیشن میں چھپنے والی رپورٹ کو بہترین قرار دیا گیا۔ دوسرے نمبر پر نیوز لائن کے ندیم شہزاد کی رپورٹ رہی جبکہ تیسری پوزیشن نیا دور کے انگریزی ایڈیشن میں چھپنے والی منصور علی کی رپورٹ کو ملی۔ سٹوڈنٹس کی رپورٹس میں گورنمنٹ کالج برائے خواتین کارخانہ بازار کے شعبہ ماس کمیونیکیشن کی طالبہ عروہ جاوید کی دیہی خواتین کی ورکنگ اور انکے حقوق کے تناظر میں بنائی گئی رپورٹ کو بہترین قرار دیا گیا۔ دوسرے نمبر پر جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے شعبہ ماس کمیونیکیشن کی طالبہ خوشنود زہرا کی رپورٹ رہی جبکہ تیسری پوزیشن بھی جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے شعبہ ماس کمیونیکیشن کے سہیل احمد اور طارق عزیز کی بنائی ہوئی رپورٹ کو ملی ۔ ویڈیو گرافی میں ایکسپریس نیوز کے شہزاد علی شامی کی بنائی گئی ویڈیو کو بہترین قرار دیا گیا۔نوریز اعجاز کی لائلپورکے تاریخی منظرنامے پر بنائی گئی ویڈیو کو دوسری اور عثمان ادریس کی کٹاس راج مندر پر بنائی گئی ویڈیو کو تیسری پوزیشن ملی۔ فوٹو گرافی میں فیصل آباد انسٹی ٹیوٹ آف آرٹ اینڈ ڈیزائن کے طالب علم ابوبکر کی ماحولیاتی آلودگی اور اس سے آبی زندگی کو پہنچنے والی اثرات پر بنائی گئی تصویر کو بہترین قرار دیا گیا۔ دوسری پوزیشن روزنامہ نئی بات پشاور کے فوٹوگرافر محمد نعیم کی تصویرکو ملی جبکہ روزنامہ پبلک کے عظیم حیدر اور نیوزلائن کے قیس عالم مشترکہ طور پر تیسری پوزیشن کے حقدار قرار دئیے گئے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کمشنر فیصل آباد محمود جاوید بھٹی نے کہا کہ میڈیا معاشرے کا سب سے حساس حصہ ہے۔ میڈیا سے وابستہ افراد کو اپنی معاشرتی ذمہ داریوں کا پورا احساس اور ادراک ہونا چاہئے۔ معاشرتی حقوق کی فراہمی اور شعور پر کام کرنے والے میڈیا کے نمائندگان خراج تحسین کے مستحق ہیں۔ اس کے ساتھ ہی معاشرے کا مثبت تاثر دنیا کے سامنے لانا بھی وقت کی ضرورت ہے۔ ماحولیاتی آلودگی’ چائلڈ لیبر ‘خواتین کے حقوق ‘ دیہی خواتین کی ورکنگ ‘ کٹاس راج مندر ‘ لائلپور کے تاریخی منظرنامے اور اسی طرح کے دیگر اہم موضوعات پر کام دیکھ کر خوشی ہوئی کہ میڈیا اس تناظر میں اپنا کردار بخوبی ادا کررہا ہے۔ اس موقع پر سینئر صحافی ناصر زیدی نے کہا کہ شمس الاسلام ناز ایک عہد ساز شخصیت تھے۔ انہوں نے ہمیشہ پسے ہوئے طبقات کے حقوق کیلئے اپنے قلم کو تیر کی طرح استعمال کیا ۔ جبکہ صحافیوں کے حقوق کے تحفظ اور آزادی اظہار کی جدوجہد میں بھی وہ تاریخی کردار ادا کرتے رہے ہیں۔ فیصل آباد یونین آف جرنلسٹس خراج تحسین کی مستحق ہے کہ اس نے ایسی عہد ساز شخصیت کے نام سے میڈیا ایکسی لینس ایوارڈ کا اجراء کیا۔ تقریب سے سینئر صحافی جاوید صدیقی’ ندیم جاوید ‘ طاہر رشید اور حامد یٰسین نے بھی خطاب کیا۔

Related posts