فرانس میں مطالعہ تصوف کی روایت: جی سی یونیورسٹی میں سیمینار

فیصل آباد (نیوز لائن) شعبہ علوم اسلامیہ گورنمنٹ کالج یونیورسٹی فیصل آباد کے زیر اہتمام ایک روزہ انٹر نیشنل سیمینار بعنوان ” فرانس میں مطالعہ تصوف کی روایت“ کا انعقاد کیا گیا اس سیمینار کی صدارت پروفیسر ڈاکٹر محمد آصف اعوان (ڈین فیکلٹی آف اسلامک اینڈ اورینٹل لرننگ) نے کی۔ سیمینار میں فرانسیسی مہمان مقرر،پروفیسر ڈاکٹر الیگزنڈر پاپاز (ڈائریکٹر نیشنل سنٹر فارسائنٹیفک ریسرچ) پیرس فرانس تھے۔سیمینار کے آغاز میں ڈاکٹر غلام شمس الرحمٰن (چیرمین شعبہ علوم اسلامیہ و عربی) نے فرانس میں تصوف کی تاریخ پر گفتگو کی اور مہمان مقرر کا تفصیلی تعارف کروایا۔مہمان مقرر پروفیسر ڈاکٹر الیگزنڈر پاپاز نے فرانس میں تصوف کی تاریخ کو بالترتیب پروجیکٹر کے ذریعے سامعین کے سامنے پیش کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ فرانس میں تصوف کے متعدد طرق موجود ہیں جن میں شاذلیہ،نقشبندیہ،قادریہ وغیرہ معروف طریقے ہیں۔انہوں نے فرانسیسی محققین کی تصوف پر تصانیف اور دیگر زبانوں سے فرانسیسی میں ترجمہ کردہ کتب کا تعارف پیش کیا اور فرانس میں تصوف کے آغاز اور ارتقاء کا جامع جائزہ پیش کیا۔انہوں نے اپنے ادارے نیشنل سنٹر فار سانٹیفک ریسرچ پیرس کی تصوف پر متعدد تصانیف سے سامعین کو آگاہ کیا۔اس کے بعد انہوں نے اپنی تصانیف کا تعارف کروایا۔ الیگزنڈر پاپاز کا موضوع تحقیق وسط ایشیاء میں مطالعہ تصوف ہے وہ اس وقت ہائر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد کی طرف سے ایک پراجیکٹ پر ڈاکٹر غلام شمس الرحمٰن کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں۔صدارتی خطاب پروفیسر ڈاکٹر محمد آصف اعوان نے دیا۔ان کا کہنا تھا کہ تصوف دراصل کردار کا نام ہے اور اس کا تعلق انسانیت کی خدمت سے ہے۔ہر وہ شخص صوفی ہے جو کردار کا اچھا ہے اور انسانیت کا خادم ہے۔پروگرام کے اختتام پر طلباء و اساتذہ نے مہمان مقرر سے سوالات کئے۔

Related posts