فیصل آباد میں جعلی کرنسی پھیلانے کا خوفناک منصوبہ


فیصل آباد(احمد یٰسین)فیصل آباد کی کرنسی مارکیٹ میں جعلی نوٹ پھیلانے کا خوفناک منصوبہ سامنے آیا ہے۔کرنسی مافیا پاکستانی اور غیرملکی نوٹ مختلف طریقوں سے مارکیٹ میں پھیلا رہا ہے ۔اہم کاروباری شخصیات‘ کرنسی ایجنٹ ‘ بنک افسران اس مافیا کا حصہ ہیں جبکہ سیاسی رہنما اور پولیس و انتظامی افسران ان کی پشت پناہی کر رہے ہیں۔میڈیا سے وابستہ چند افراد کے بھی اس کرنسی دھندے میں شال اور مافیا کی سرپرستی کرتی ہیں۔جعلی کرنسی مافیا کے چند افرادکو ایک پولیس پارٹی نے مافیا میں ہی شامل ایک پولیس اہلکارکی مخبری پر گرفتار کیا مگر ’’اوپر‘‘ سے آنیوالی ایک فون کال پر راتوں رات ملزم آزاد کرتے بنی۔آزادی دینے سے قبل پولیس پارٹی نے جعلی کرنسی مافیا سے اپنا اصلی کرنسی کا ’’حصہ‘‘ وصول کر لیا۔نیوزلائن کے مطابق فیصل آبادمیں جعلی کرنسی نوٹ پھیلانے کا خوفناک منصوبہ سامنے آیا۔ جعلی کرنسی مافیا میں کئی ایک اہم کاروباری شخصیاے شامل ہیں،مافیا نے ایجنٹوں کے ذریعے پاکستانی و غیرملکی کرنسی نوٹ مارکیٹ میں پھیلانے کا دھندا شروع کر رکھا ہے۔ذرائع کے مطابق صرف پاکستانی روپیہ ہی نہیں انڈین روپیہ‘ ڈالر‘ پونڈ‘ جاپانی ین‘ برازیلین کرنسی‘ یورپین یورو ‘ ریال اور بعض دوسری کرنسیوں کے جعلی نوٹ مارکیٹ میں پھیلائے جا رہے ہیں۔فیصل آباد کی کرنسی مارکیٹ مافیا کا خاص نشانہ ہے جبکہ ایجنٹوں کے ذریعے بھی جعلی نوٹ مارکیٹوں میں پھیلانے پر کام ہو رہا ہے۔ مافیا کے بعض افراد کے ہنڈی کا کام کرنے کی آڑ میں بھی جعلی کرنسی کا کاروبار کر رہے ہیں۔جعلی کرنسی کا دھندا کرنے والے کچہری بازار‘ ریل بازار‘ ڈی گراؤنڈ اور بعض دیگر علاقوں میں کارروائیاں کرنے میں سرگرم ہیں۔ جعلی کرنسی پھیلانے کیلئے کرنسی ایکسچینج ‘ بانڈز کی فروخت اور دیگر کاروبار کی آڑ بھی لی جارہی ہے۔ذرائع کے مطابق فیصل آباد پولیس کی ایک ٹیم نے چند روز قبل ڈی گراؤنڈ سے جعلی کرنسی مافیا کے سات افراد کو حراست میں لیا اور ان سے بھاری تعداد میں جعلی کرنسی نوٹ برآمد کئے۔پالیس ٹیم کی یہ کارروائی بھی مافیا میں ہی شامل ایک نکے تھانیدار کی مخبری کی مرہون منت بتائی جاتی ہے۔پکڑے جانیوالے افراد گلستان کالونی کے رہائشی تھے اور ڈی گراؤنڈ جیسے اہم کاروباری علاقے میں جعلی کرنسی پھیلانے کا دھندا کر رہے تھے۔ ذرائع کے مطابق پکڑے جانے والے مافیا ارکان کے پاس سے ایک ارب سے زائد مالیت کے ملکی و غیرملکی جعلی کرنسی نوٹ برآمد ہوئے تھے۔ پولیس ابتدائی کارروائی ہی کر رہی تھی کہ اعلیٰ سطحی سیاسی و انتظامی سفارشی سرگرم ہو گئے اور پولیس کو ملزمان بغیر کسی کارروائی کے رہا کرتے ہی بنی۔مگر پولیس ٹیم نے اپنی’’ کارروائی‘‘ ڈال لی ۔ پہلے ملزمان سے برآمد ہونیوالا مال مقدمہ بحق پولیس پارٹی ضبط کرنے کا فیصلہ کیا گیا مگر پھر تمام مال ہی جعلی ہونے کے شبہ پرمافیا سے ڈیڑھ کروڑ روپے کے’’ اصلی نوٹ‘‘لے کر نقد لے کر مال مقدمہ اور پکڑے جانیوالے سات افراد مافیا کے حوالے کر دئیے گئے۔فیصل آباد پولیس کے اہم افسران اس کرنسی دھندے اور مافیاز بارے جانتے ہیں مگر ان کے خلاف کارروائی کرنے سے گریزاں ہیں۔ ڈی گراؤنڈ سے جعلی کرنسی مافیاکے ایک پولیس ٹیم کے ہاتھوں پکڑے اور راتوں رات رہا کئے جانے بارے بھی اعلیٰ پولیس افسران آگاہ ہیں مگر ملزمان کو اعلیٰ شخصیات کی پشت پناہی حاصل ہونے کی وجہ سے کسی قسم کا ایکشن نہیں لیا جا رہا۔

Related posts

Leave a Comment