فیصل آباد کے کسانوں کا سرکاری گندم خریداری مہم پر عدم اعتماد

فیصل آباد (ندیم جاوید) ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریشن اور محکمہ خوراک کی بدانتظامی و نااہلی کی وجہ سے فیصل آباد کے کسانوں نے سرکاری گندم خریداری مہم پر عدم اعتماد کردیا ہے اور اوپن مارکیٹ میں گندم فروخت کرنے کو ترجیح دینے لگے ہیں۔ کسانوں کے عدم اعتماد کی وجہ سے ضلعی انتظامیہ کو گندم خریداری ٹارگٹ پورے کرنے کے لالے پڑگئے ہیں اور انتظامیہ بحرانی کیفیت کا شکار ہے ۔ نیوز لائن کے مطابق فیصل آباد کی ضلعی انتظامیہ کیلئے گندم خریداری کا سرکاری ٹارگٹ پورا کرنا بھی جوئے شیر لانے کے مترداف بن چکا ہے۔ سرکاری گندم خریداری مراکز پر مناسب انتظامات نہ ہونے کی وجہ سے کسانوں کو شدید خواری کا سامنا ہے جبکہ اوپن مارکیٹ میں سرکاری نرخوں سے زائد ریٹ پر گندم فروخت ہورہی ہے۔ اوپن مارکیٹ میں گندم فروخت کرنے پر کسان کو سفری اخراجات بھی برداشت نہیں کرنا پڑتے اور سرکاری مراکز کے چکر پر چکر کاٹنے سے بھی نجات مل جاتی ہے۔ سرکاری مراکز پر کسانوں کے ساتھ عملے کا رویہ بھی نامناسب اور توہین آمیز رہنے کی بھی شکایات ہیں۔ اس صورتحال کے تناظر میں فیصل آباد کے کسانوں کی طرف سے سرکاری گندم خریداری مہم پر عدم اعتماد کی صورتحال نظر آرہی ہے۔ ضلعی انتظامیہ اور محکمہ خوراک تمام کوششوں کے باوجود گندم خریداری کا ٹارگٹ پورا کرنے میں ناکام نظر آرہے ہیں۔ ڈپٹی کمشنر اور دیگر حکام کسانوں کے عدم اعتماد کی وجہ سے بحرانی صورتحال سے دوچار ہیں۔ سرکاری گندم خریداری ٹارگٹ پورا کرنا دشوار سے دشوار تر ہوتا جارہا ہے اور انتظامیہ گندم خریداری ٹارگٹ پورا کرنے کیلئے کسانوں سے زبردستی گندم حاصل کرنے اور اوپن مارکیٹ سے بلیک میں گندم خرید کر ٹارگٹ پورا کرنے سمیت متعدد آپشنز پر غور کررہی ہے۔ سرکاری گندم خریداری مہم کو درپیش خطرات اور کسانوں کے عدم اعتماد کے روئیے کے حوالے سے مؤقف لینے کیلئے ڈپٹی کمشنر فیصل آباد سردار سیف اللہ ڈوگر سے رابطہ کیا گیا مگر انہوں نے اس معاملے پر چند الفاظ میں ہی اپنا مؤقف دینا بھی مناسب نہ سمجھا ۔

Related posts