لوہے کی تلاش کے معاہدے میں کرپشن‘ سیکرٹری معدنیات شامل تفتیش


فیصل آباد(نیوز لائن)رجوعہ سادات چنیوٹ میں خام لوہے کے ذخائر کی تلاش کا معاہدہ من پسند افرادکو دینے کے درج مقدمہ میں سابق سیکرٹری معدنیات پیش ہوگئے ہیں۔ سابق سیکرٹری امتیاز چیمہ تقریبا تین گھنٹے تک اینٹی کرپشن کے آفس میں رہے۔ ان سے ڈائریکٹر اینٹی کرپشن مہر شفقت اللہ مشتاق، ڈپٹی ڈائریکٹر لیگل شہرام مظفر اور سرکل آفیسر ریجن انسپکٹر ناصر چٹھہ پر مشتمل تفتیشی ٹیم نے سوال جواب کئے۔چنیوٹ میں رجوعہ سادات میں خام لوہے کے ذخائرکی تلاش کے سلسلہ میں 915 بلین ڈالرکا ایک معاہدہ امریکی کمپنی سے طے کر لیا گیا تھا لیکن رجوعہ سادات میں لوہے کے ذخائرکی دریافت پر پیش رفت نہ ہو سکی۔ تاہم اینٹی کرپشن نے معاہدہ کرنے میں بدنیتی سامنے آنے پر 2016 میں مقدمہ21 درج کیا تھا۔ جس میں سابق صوبائی وزیر معدنیات محمد سبطین، سابق سیکرٹری معدنیات امتیاز احمد چیمہ، ٹیکنیکل کمیٹی کے ممبران میاں اسلم، عبدالستار ، ادریس رضوانی، سابق سیکرٹری میاں بشارت اور ایک شہری ارشد وحید کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔ 2016 سے درج مقدمے میں سابق سیکرٹری معدنیات امتیاز احمدگذشتہ روز پیش ہوئے۔اس سے قبل سابق صوبائی وزیرمحمد سبطین بھی پیش ہوچکے ہیں جبکہ مقدمے میں نامزد دو ملزمان سابق سیکرٹری پنجمن بشارت اور ممبر ٹیکنیکل ادریس رضوانی وفات پا چکے ہیں۔ امتیاز چیمہ تقریبا تین گھنٹے تک اینٹی کرپشن کے تفتیشی پینل کے سامنے موجود رہے۔ انہوں نے سرکاری ریکارڈ اور تحریری بیان بھی جمع کروایا۔ ذرائع کے مطابق ضرورت پڑنے پر سیکرٹری معدنیات کو دوبارہ بھی طلب کیا جا سکتا ہے۔

Related posts