مجرمانہ سرگرمیوں میں فیصل آباد پولیس کا ملک بھر میں پہلا نمبر


فیصل آباد(احمد یٰسین) آر پی او فیصل آباد غلام محمود ڈوگر نے کہا ہے کہ مجرمانہ سرگرمیوں میں ملک بھر میں پہلے نمبر پر ہے۔ فیصل آباد پولیس کے اہلکاروں کی بہت بڑی تعداد جرائم پیشہ عناصر کے ساتھ تعلقات رکھتی ہے اور انہیں تحفظ فراہم کرتی ہے۔ مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے حوالے سے فیصل آباد سے زیادہ ملک بھر میں کہیں کی پولیس بھی فیصل آباد پولیس کا مقابلہ نہیں کرپائی۔ فیصل آباد چیمبر آف کامرس سے خطاب کرتے ہوئے ریجنل پولیس آفیسر نے کہا کہ وہ سندھ اور بلوچستان میں بھی رہے ہیں جبکہ پنجاب کے دیگر علاقوں میں بھی خدمات سرانجام دیتے رہے ہیں مگر فیصل آباد جیسے مجرمانہ ذہنیت کے پولیس اہلکار انہوں نے کہیں نہیں دیکھے۔ ان کا کہنا تھا کہ فیصل آباد پولیس کے چالیس فیصد تک چھوٹے بڑے اہلکار فارغ کرنے اور تیس سے چالیس فیصد تک ملازمین تبدیل کرنے کی ضرورت ہے تاکہ امن و امان کی صورتحال میں بہتری لائی جا سکے۔اور فیصل آباد پولیس کو جرائم پیشہ عناصر کے پشت پناہوں سے پاک کیا جا سکے۔ریجنل پولیس آفیسر غلام محمود ڈوگر نے بتایا کہ امن وامان سے متعلق مسائل کے حل کیلئے کمیونٹی پولیسنگ ضروری ہے اور اس پر عمل درآمد کی وجہ سے ہی گزشتہ انتخابات اور اس کے بعد احتجاجی تحریک کے دوران فیصل آباد میں نہ تو سڑکیں بند ہوئیں اور نہ ہی جائیدادوں کو نقصان پہنچایا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ فیصل آباد میں روزانہ 15سے 20وارداتیں ہوتی ہیں۔ ناقابل دست اندازی پولیس کے مسائل کو حل کرنے کیلئے پہلے ہی تھانوں کی سطح پر مصالحتی کمیٹیاں کام کر رہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ وہ خود چاہتے ہیں یہاں کوئی ایسا ادارہ ہو جو تھانوں کی سطح پر پولیس افسروں کی کارکردگی کا جائزہ لے سکے۔ اس طرح کے اقدام سے سی پی ایل سی بحالی بھی آسان ہو سکتی ہے۔ انہوں نے ایف سی سی آئی کے ای پولیس سنٹر کو بھی فوری بحال کرنے کا یقین دلایا اور بتایا کہ یہاں لرنر لائسنسوں کے علاوہ مزید سہولتیں مہیا کرنے کی بھی ہر ممکن کوششیں کی جائے گی۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ خدمت سیکٹر اور تمام تھانوں کو آن لائن کر دیا گیا ہے۔ جس کے بعد لوگوں کو شکایات کے اندراج کیلئے خود چل کر تھانوں میں نہیں جانا پڑے گا۔ ڈکیتی کی وارداتوں کی روک تھام کے سلسلہ میں انہوں نے بتایا کہ تاجر برادری بھاری رقوم کی نقل و حمل کیلئے پولیس کی مدد لے سکتی ہے۔ اسی طرح صنعتی ورکروں کی رجسٹریشن کا کام جاری ہے انہوں نے بتایا کہ مالکان بھی مزدور بھرتی کرنے سے قبل ان کی پولیس سے تصدیق کرائیں۔ سیف سٹی پراجیکٹ کے بارے میں انہوں نے بتایا کہ اس کی فنڈنگ رکی ہوئی ہے ۔ وسائل ملنے کے ساتھ ہی اس پر کام شروع کر دیا جائے گا۔اس موقع پر تقریب کے مہمان خصوصی کمشنر فیصل آباد آصف اقبال چوہدری نے کہا کہ فیصل آباد ڈویژن کے ترقیاتی اور فلاحی کاموں میں بزنس کمیونٹی کی موثر شرکت کو یقینی بنانے کیلئے ڈویژن اور ضلعی سطح کی تمام مشاورتی کمیٹیوں میں فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کو موثر نمائندگی دی جائے گی اور اس سلسلہ میں بہت جلد نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ شوگر کین ، سیس ہائی رائز بلڈنگ ، ایف ڈی اے ، فیصل آباد ویسٹ مینجمنٹ کمپنی اور دیگر کمیٹیوں میں چیمبر اور دیگر سٹیک ہولدڑز کی شمولیت سے ان کی کارکردگی کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ عوام کے مسائل کو بھی موثر طور پر حل کیا جا سکے گا۔ انہوں نے سرکاری اداروں اور بزنس کمیونٹی میں موثر رابطوں پر زور دیا اور بتایا کہ مل کر کام کرنے سے زیادہ بہتر نتائج حاصل کئے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ کلین اینڈ گرین پنجاب پروگرام کے حوالے سے فیصل آباد چیمبر نے بھر پور تعاون کیا ہے اور اس سے شہر کو سر سبز و شاداب بنانے کے ساتھ ساتھ ماحولیاتی آلودگی پر قابوپانے میں بھی مدد ملے گی۔ فیصل آباد ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کے حوالے سے انہوں نے بتایا کہ فیصل آباد میں روزانہ 1600میٹرک ٹن کوڑا پیدا ہوتا ہے جبکہ کمپنی کے پاس صرف 1200ٹن کوڑا اٹھانے کی استعداد ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اب حکومت نے اضافی کوڑے کو ٹھکانے لگانے کیلئے نجی شعبہ سے گاڑیاں کرایے پر لینے کی اجازت دے دی ہے۔ جس سے صفائی کی صورتحال مزید بہتر ہو گی۔ انہوں نے بتایا کہ اس طرح کے کاموں میں فیصل آباد چیمبر کی موثر شرکت سے ہی ریسورس گیپ کو کم کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے عوامی‘ شہری اور فلاحی کاموں کے سلسلہ میں فیصل آباد چیمبر کے کردار کو سراہا اور کہا کہ یہ شہر آپ لوگوں کا ہے اس لئے اس کی بہتری میں آپ لوگوں کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا۔ ایک سوال کے جواب میں کمشنر نے بتایا کہ مدینہ ٹاؤن کے ہاکی سٹیڈیم کی سڑکوں کی فوری مرمت کیلئے دو کروڑ روپے کی گرانٹ کی سفارش کی ہے جبکہ یہاں آسٹرو ٹرف بچھانے کیلئے بھی اعلیٰ سطح پر رابطے کئے جار ہے ہیں انہوں نے سٹیڈیم میں دکانوں کی الاٹمنٹ کے حوالے سے بتایا کہ وہ اس بارے ایک ریفرنس ایف آئی اے کو بھیج رہے ہیں ۔ انہوں نے مختلف سوالوں کے بھی جواب دیئے اور بتایا کہ سالانہ ترقیاتی پروگرام کی تیاری پر کام جاری ہے اس سلسلہ میں عوامی نمائندوں کے ساتھ ساتھ فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کو بھی اپنی سفارشات دینی چاہیں۔ مشنر نے بتایا کہ 15اور 16دسمبر کو آرمی پبلک سکول کے سانحہ کی یاد میں ایک تقریب میں شہداء کو خراج عقیدت پیش کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ چیمبر کو اس موقع پر شہر میں شہداء کی تصاویر پر مبنی بینر لگانے چاہئیں ۔ انہوں نے مختلف کھیلوں کے انعقاد کے سلسلہ میں تعاون کرنے پر فیصل آباد چیمبر کے صدر کا شکریہ ادا کیا اور بتایا کہ کبڈی کی انٹر نیشنل چیمپئن شپ آئندہ ماہ فیصل آباد میں ہورہی ہے جس میں پاکستان کے علاوہ ایران اور بھارت کی ٹیمیں بھی حصہ لیں گی۔ انہوں نے اس سلسلہ میں چیمبر سے تعاون کی اپیل کی ۔ اس سے قبل فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر سید ضیاء علمدار حسین نے بتایا کہ یہ ادارہ گزشتہ 44سالوں سے اس شہر کی تاجر اور صنعتکار برادری کے مفادات کے تحفظ کے علاوہ شہر کی ترقی کیلئے بھی خدمات سر انجام دے رہا ہے۔ اس کے ممبروں کی تعداد 7ہزار ہے جبکہ قومی برآمدات میں اس کا حصہ 45فیصد ہے۔ انہوں نے بتایا کہ انہوں نے اس سال کیلئے ٹرپل’’ ای‘‘ کی ویژن دی ہے تاکہ ویلیو ایڈیشن کے ذریعے برآمدات میں مزید اضافہ کیا جا سکے۔ انہوں نے بتایا کہ تاجر برادری نے 3کروڑ روپے مالیت کے پودے لگائے جبکہ کئی تعلیمی ادارے بھی ملک کے سرکردہ کاروباری اداروں کی سرپرستی میں چل رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ پہلے یہاں سے ہفتہ میں صرف 6پروازیں چلتی تھیں جبکہ اب ان کی تعداد 56ہوچکی ہے۔ انہوں نے دیگر سماجی اور عوامی شعبوں میں بھی فیصل آباد چیمبر کے کردار کا ذکر کیا اور مطالبہ کیا کہ ان کے نمائندوں کو مختلف کمیٹیوں میں مستقل نمائندگی دی جائے۔ آخر میں سوال و جواب کی نشست میں انجینئر رضوان اشرف، میاں گلزار احمد، چوہدری محمد بوٹا، شبیر حسین چاولہ، تنویر ریاض، چوہدری محمد اصغر ، چوہدری غلام سرور، رانا سکندر اعظم ، شفیق شاہ اور دیگر ممبران نے حصہ لیا جبکہ آخر میں چیمبر کے سابق صدر نے کمشنر آصف اقبال چوہدری جبکہ سابق سینئر نائب صدور اور نائب صدور نے ریجنل پولیس آفیسر کو فیصل آباد چیمبر کی اعزازی شیلڈیں پیش کیں۔ اس موقع پر ایڈیشنل کمشنر رائے واجد بھی موجود تھے انہیں بھی فیصل آباد چیمبر کی شیلڈ پیش کی گئی۔

Related posts