محکمہ زراعت نے سورج مکھی کو گندم کی متبادل فصل قرار دیدیا


فیصل آباد (نیوز لائن) محکمہ زراعت نے سورج مکھی کو کاشتکاروں کیلئے گندم کی متبادل فصل قرار دیدیا ہے۔ محکمہ زراعت کی جانب سے کاشتکاروں سے کہا گیا ہے کہ جن علاقوں میں کاشتکاروں نے کپاس کے بعد گندم کاشت نہیں کی وہاں سورج مکھی کاشت کی جاسکتی ہے، پاکستان کی معیشت کا زیادہ تر انحصار کپاس کی فصل پر ہے۔ کپاس کی مجموعی پیداوارکا تقریباً 75 فیصد پنجاب میں پیدا ہوتا ہے۔ کپاس کی اچھی اور بہتر پیداوار حاصل کرنے کے لئے مختلف عوامل اور مراحل اہم کردار ادا کرتے ہیں۔کپاس کی فصل پر گلابی سنڈی کے حملہ کے پیش نظر موسم سرما کے دوران موثر حکمت عملی اپنا کر آئندہ کپاس کی فصل کو گلابی سنڈی کے نقصان سے بچایا جا سکتا ہے۔گلابی سنڈی نومبر ،دسمبر میں سرمائی نیند کی حالت میں چلی جاتی ہے اور موسم سرما جڑے ہوئے بیجوں ،چھڑیوں پر بچے کھچے ٹینڈوں اور جننگ فیکٹریوں کے کچرے میں خوابیدہ حالت میں گزارتی ہے۔اس حوالے سے ڈائریکٹر زراعت توسیع فیصل آباد چوہدری عبدالحمید نے کہا کہ کاشتکار ملکی خود کفالت اور خود مختاری کے اصولوں پر عمل پیرا ہوتے ہوئے سورج مکھی کی کاشت کو یقینی بنائیں خوردنی تیل کی ضروریات کو پورا کرنے میں ہم اسوقت تک خودکفیل نہیں ہوسکتے جب تک روایتی تیل دار اجناس کے علاوہ غیر روایتی تیل دار اجناس جن میں سورج مکھی سرفہرست ہے کاشت نہیں کی جاتیں قومی وقار کا تقاضا ہے کہ کاشت کار سورج مکھی کی کاشت کو یقینی بنائیں۔

Related posts